نیوز کوڈ :437353
حکومت تفتان بارڈر پر پھنسے زائرین کو فوری نکالنے کے احکامات جاری کرے
مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ نے کہا کہ تفتان بارڈر پر ہزاروں مرد خواتین بچے کھلے آسمان تلے کئی دنوں سے محصور ہیں،سرد موسم اور بنیادی طبی سہولیات کے فقدان کی وجہ سے تین زائرین جان بحق ہوچکےہیں ۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ حجت الاسلام راجہ ناصرعباس جعفری نے مرکزی میڈیا سیل سے جاری اپنے بیان میں کہاہے کہ وزیر مملکت برائے داخلہ کی ہدایات کے باوجود تفتان بارڈر پر اب تک کوئی سہولت فراہم نہیں کی جاسکی ہیں،حکومت تفتان بارڈر پر پھنسے زائرین کو فوری نکالنے کے احکامات جاری کرے،تفتان بارڈر پر ہزاروں مرد خواتین بچے کھلے آسمان تلے کئی دنوں سے محصور ہیں،سرد موسم اور بنیادی طبی سہولیات کے فقدان کی وجہ سے تین زائرین جان بحق ہوچکےہیں،صورتحال تشویشناک حد تک پہنچ چکی ہے اگر فوری انتظام نہ کیا گیا تو وبائی امراض کے پھیلنے اور مزید اموات کا خطرہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ محرم الحرام زیارات کیلئے جانے والے سینکڑوں کی تعداد میں زائرین تفتان بارڈر پر ابھی بھی پھنسے ہوئے ہیں ان کو کوئی پرسان حال نہیں جبکہ گزشتہ ماہ وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی کے واضع احکامات کے باوجود اب تک انتظامیہ زائرین کو سہولت پہنچانے میں ناکام رہی ہے ۔علامہ راجہ ناصرعباس  نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ محرم الحرام میں پاسپورٹ کے اجراء اور زائرین کیلئے تفتان بارڈر پر ہنگامی بنیادوں پر سہولت کے لئے فوری اقدامات کئے جائیں۔/۹۸۹/ف۹۴۰/