23 March 2019 - 19:50
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 440036
فونت
حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری :
مجلس وحدت مسلمین سربراہ نے کہا کہ پاکستان ایک ایٹمی قوت ہے اور جغرافیائی اعتبار سے بھی بے پناہ اہمیت کا حامل ہے۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین سربراہ حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری نے میڈیا سیل سے جاری بیان میں کہا کہ  آج نظریہ پاکستان کی پاسداری کے عہد کی تجدید کا دن ہے اس عز م کے ساتھ کہ ہم مملکت خدادا پاکستان کی نظریاتی اور جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کے لئے اپنی جانیں نچھاور سے دریخ نہیں کرینگے، وطن عزیز کی سلامتی و استحکام کے لئے جدو جہد ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ مادر وطن سے عشق ہمارے دین وایمان کا حصہ ہے اور اس پر سب کچھ قربان کیا جا سکتا ہے۔ہماری عزت، ہماری پہچان، ہماری شناخت ،ہمارے جان و مال کا تحفظ ،ہماری آزادی یہ سبھی نعمتیں اس ارض پاک کی بدولت ہمیں حاصل ہیں۔ہم اس ارض پاک کے نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کے محافظ ہیں ۔ جو عناصر ملک کی ترقی و استحکام میں روڑے اٹکانے میں مصروف ہیں وہ دراصل اسلامی نظریات کے دشمن ہیں عالمی طاقتیں دہشت گردی کا تعلق اسلام اور پاکستان سے جوڑنے کے لیے اپنے تمام وسائل استعمال کر رہی ہیں۔ جنہیں دانش و بصیرت کے ساتھ شکست دینا ہو گی۔

انہوں نے بیان کیا کہ پاکستان ایک ایٹمی قوت ہے اور جغرافیائی اعتبار سے بھی بے پناہ اہمیت کا حامل ہے۔پاکستانی قوم کو طبقاتی جنگ میں الجھا کر دشمن اپنے مذموم عزائم کی تکمیل چاہتا ہے۔باہمی اخوت و اتحاد سے دشمن کے ناپاک ارادوں کو ناکام بنایاجا سکتا ہے۔اسلام کو پارہ پارہ کرنے اور تفرقہ پھیلانے والوں کی اس ملک میں کوئی جگہ نہیں۔ جو بھی شخص یا تنظیم تفرقہ وانتشار کی بات کرے اس پر فوری پابندی لگائی جائے۔نیشنل ایکشن پلان کے روح کے مطابق عمل نہ کیا گیا تو بعید نہیں ہم پھر سے نا ختم ہونے والے مشکلات سے دوچار ہوں، ہمیں مصلحت پسندی کو پس پشت ڈال کر ملکی سلامتی کے لئے کام کرنا ہوگا اور یہی ملک میں امن کے حقیقی قیام کا واحد حل ہے۔

علامہ ناصر عباس نے کہا کہ یوم پاکستان پر ہمیں اپنے ان شہدا کو بھی یاد رکھنا ہو گا جو اس ملک کے بقا کی جنگ لڑتے ہوئے اپنی جانوں کوارض پاک پر نچھاور کر گئے۔ملک کی حفاظت کرتے ہوئے شہید ہونے والے پاک فوج کے جانثاروں کو ہم خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور دہشت گردی کی بھینٹ چڑھنے والے پاکستانیوں کی بلندی درجات کے لیے دعاگو ہیں۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬