14 April 2019 - 14:18
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 440169
فونت
ہزار گنجی واقعہ کے خلاف مظاہرین نے کوئٹہ کے مغربی بائی پاس پر گزشتہ تین روز سے دھرنا دے رکھا ہے۔ دھرنے میں خواتین اور بچوں کی بھی بڑی تعداد موجود ہے۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق کوئٹہ میں خودکش حملے کے خلاف ہزارہ شیعہ مسلمانوں کی جانب سے مغربی بائی پاس پر دھرنا آج تیسرے روز بھی جاری ہے۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ حکومت ایسے واقعات دوبارہ نہ ہونے، ہزارہ برادری کو سیکورٹی دینے اور واقعے میں ملوث عناصر کو کیفر کردار تک پہنچانے کی یقین دہانی کرائے۔

پولیس اور ایف سی اہلکاروں کی بڑی تعداد بھی کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے کے لیے موجود ہے جب کہ دھرنے کی وجہ سے کوئٹہ کا مغربی بائی پاس بند ہے جس سے ٹریفک کی روانی متاثر ہو رہی ہے۔

واضح رہے کہ بلوچستان کے شہر کوئٹہ کے علاقہ ہزار گنجی میں جمعہ کے روز خودکش دھماکے سے 20 افراد شہید اور48 زخمی ہوئے تھے۔

فروٹ منڈی کوئٹہ سے 20 کلومیٹر کے فاصلے پر ہے جہاں سندھ اور پنجاب سے فروخت کے لیے مال لایا جاتا ہے۔ دھماکہ اس وقت ہوا جب لوگوں کی بڑی تعداد خرید و فروخت کے لیے منڈی میں موجود تھی۔

پولیس نے دھماکے کے مقام سے اہم شواہد اکھٹے کرلیے ہیں جبکہ مبینہ خودکش حملہ آور کے جسم کے اعضاء ڈی این اے ٹیسٹ کے لیے لاہور بھجوا ئے جا رہےہیں۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬
تازه ترین خبریں
مقبول خبریں