18 July 2019 - 13:51
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 440834
فونت
محمد جواد ظریف :
ایران کے وزیر خارجہ نےایرانی عوام کے خلاف وائٹ ہاوس کی پابندیوں کو دہشتگردانہ پالیسی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایران دہشت گردوں کے ساتھ مذاکرات نہیں کرے گا۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے نیویارک میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے ایران کے خلاف اقتصادی جنگ شروع کی ہے۔

محمد جواد ظریف نے کہا کہ امریکی صدر کی جانب سے اقتصادی جنگ نے جس پر وہ فخر کر رہا ہے ایرانی عوام کو نشانہ بنایا ہے۔

ایران کے وزیر خارجہ نے اس جانب اشارہ کرتے ہوئے کہ امریکہ کی اقتصادی جنگ نے ایرانی حکام یا فوج کو نشانہ نہیں بنایا عام شہریوں کو نشانہ بنایا ہے کہا کہ امریکہ کا یہ اقدام دہشت گردی ہے اس لئے کہ دہشت گردی عوام کو متاثر کرتی ہے تا کہ اس طرح وہ اپنے سیاسی عزائم میں کامیاب ہو سکیں۔

محمد جواد ظریف نے کہا کہ قانونی نقطہ نگاہ سے دہشتگردی کی تعریف کچھ اس طرح ہے کہ غنڈہ گردی کی جائے، کسی بھی ملک کی پالیسی پراثر انداز ہو اور اسے دھونس و دھمکی کے ذریعے بدلا جائے یا پھر عوام پر اس قسم کی پالیسیوں کو بدلنے کیلئے دباو ڈالا جائے۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ٹرمپ، ایران پر زیادہ سے زیادہ دباو ڈالنے اوردھونس و دھمکی کے ذریعے ایران کو مذاکرات کی میز تک لانا چاہتا ہے تاہم ایران نے سخت مزاحمت کے ذریعے امریکہ کی اس پالیسی کو شکست سے دوچار کیا ہے۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬
تازه ترین خبریں
مقبول خبریں