20 July 2019 - 11:08
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 440845
فونت
وفا فاؤنڈیشن کے صدر پرویز علی وفا نے کہا کہ ریاست جموں و کشمیر خصوصاً جموں خطہ ماضی میں کسی حد تک پُرامن رہا ہے لیکن اب چند مفاد خصوصی عناصر مذہب کے نام پو لوگوں کو بانٹنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، کشمیر کے مسلمانوں نے شری امرناتھ جی ہندو یاتریوں کے لئے لنگر کا اہتمام کرکے بھائی چارے کی مثال پیش کر کے ملک بھی میں بھائی چارے اور رواداری کا پیغام پھیلایا۔

وفا فاؤنڈیشن کے بینر تلے جموں میں مسلمان ممبران نے کنجونی چوک میں شری امرناتھ یاتریوں کو کشمیر روانہ ہونے سے پہلے کھیر پیش کر دی۔ اس موقعہ پر وفا فاؤنڈیشن کے صدر پرویز علی وفا نے کہا کہ ریاست جموں و کشمیر خصوصاً جموں خطہ ماضی میں کسی حد تک پُرامن رہا ہے لیکن اب چند مفاد خصوصی عناصر مذہب کے نام پو لوگوں کو بانٹنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

انہوں نے یہ کہتے ہوئے کہ لنگر منعقد کرنا مسلم بھائیوں کی طرف سے محبت کی ایک علامت ہےکہا : ہم نے ریاست میں کافی چلنجیوں کا مقابلہ کیا ہے اور مستقبل میں بھی ایسا کریں گے۔

وفا فاؤنڈیشن کے ذمہ داروں نے اس بات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہ ہم ہمیشہ سے ہی بلا لحاظ مذہب و ملت، رنگ و نسل لوگوں کی بھلائی کیلئے کام کرتے ہیں کہا: ہمارا مقصد سیکولرازم، آپسی رواداری اور بھائی چارے کو کشمیر میں مستحکم بنانا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم مستقبل میں بھی ایسے پروگرام منعقد کرتے رہیں گے کیونکہ بھائی چارے کو پھیلانے کی ضروت ہے۔ / ۹۸۸/ ن

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬
تازه ترین خبریں
مقبول خبریں