26 November 2019 - 12:28
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 441668
فونت
ملیشیا میں شیعہ مراکز پر دباو کی وجہ سے اہل تشیع مشکلات سے دوچار ہیں۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، فری ملیشیا ٹوڈے کے مطابق ملک میں شیعہ اقلیت کے خلاف تعصبانہ اقدامات کا سلسلہ ۲۰۱۱ سے شروع ہوا جس میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے۔

حالیہ دنوں میں متعدد اہل تشیع کے افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔

ملک میں شدت پسندی تکفیری عناصر کی سرگرمیوں کی وجہ سے ملک میں جاری دو عشرے سے شیعہ پروگراموں کو رکاوٹوں کا سامنا ہے۔

اہل تشیع «سید محمد» عاشور کے دن امام بارگاہ میں نماز کی ادائیگی میں مصروف تھا جب ان پر بیس پولیس اہلکاروں نے حملہ کا اور ان کو تشدد کا نشانہ بنایا۔

انکا کہنا تھا کہ حملے سے خواتین اور بچے بری طرح خوف زدہ ہوگئے تھے۔

سید محمد اور سات دیگر افراد کو گرفتار کیا گیا جنپر مقدمات قایم کیے گیے اور سزا کی صورت میں انہیں تین سال کی قید ہوسکتی ہے۔

ایک اور واقعے میں کوالا لمپور میں «کامل ظهیری عبدالعزیز» اور بیس دیگر اہل تشیع کو دعا کی محفل سے گرفتار کیا گیا۔

ملایشیاء میں کہا جاتا ہے کہ ایک سے پانچ لاکھ کے درمیان شیعہ افراد موجود ہیں۔/۹۸۹/ف

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬
تازه ترین خبریں
مقبول خبریں