04 January 2011 - 15:19
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2251
فونت
ڈاکٹر جگناتھ :
رسا نيوزايجنسي – اردو ميڈيا کے زير اھتمام منعقدہ حسين ڈے ميں ڈاکٹر جگناتھ نے اپني تقرير ميں کہا کہ حسين صرف شخصيت نہي تحريک کا نام ہے ?
حسين ابن علي

رسا نيوزايجنسي کي رپورٹ کے مطابق ، ساکيت ڈگري کالج فيض اباد کے انگريزي شعبے کے سابق سربراہ ڈاکٹرجگناتھ ترپاٹھي نے يہ بيان کررتے ہوئے کہ کربلا ميں حسين اوران کے ساتھيوں کي قربانيوں نے اسلام کي حفاظت کي ہے کہا : اصل ميں يزيد نے اسلام کي جو حالت زار کي کردي تھي اس کي حيات مجدد ميں حسين ابن علي ، ان کے ساتھيوں اور ان کے کنبے نے اھم کردار ادا کيا ہے ?

انہوں نے امام مظلوم حسين عليہ السلام کي صداقت کا ذکر کرتے ہوئے کہا : وہ کان جو پيغام حق سننے سے بہرے ہوگئے انکو امام حسين کے چھ ماہ کے بچے نے اپني مسکراھٹ کے ذريعہ سے پيغام ديا اورھر ادمي کو انسانيت کا درس دے کر يہ بتايا کہ امام حسين عليہ السلام کا فاسق وفاجر کي بيعت کرنا ايک بہت بڑي مصيبت تھي اور اسلام کي بقاء وحفاظت ميں جان دے دينا بڑا اسان تھا ?

ڈاکٹر جگناتھ نے اپنے بيان ميں مزيد تاکيد کي : اج دنيا کو حسينت کے پيغام کي ضرورت ہے ليکن افسوس کہ حسينت کا پيغام دنيا تک نہ پہونچ پارہا ہے ?

انہوں نے يہ بيان کرتے ہوئے کہ حسين ايک شخصيت کا نام نہي بلکہ ايک مشن اور تحريک کا نام ہے جو مظلوموں کو عزت اوروقار کے ساتھ زندہ رہنے کا درس ديتي ہے کہا : اس کے غور فکر کي ضرورت ہے حسينيت کا اصل پيغام کو کس طرح دنيا کے سامنے پيش کيا جائے?

قابل ذکر ان کي تقرير سے پہلے ايڈوکيٹ سيد افتاب رضوي نے واقعہ کربلا کے فوائد واھميت پرتفصيلي روشني ڈالي ?

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬