‫‫کیٹیگری‬ :
27 January 2017 - 19:59
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 425944
فونت
حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی:
قائد ملت جعفریہ پاکستان نے کہا : مردم شماری جسے سات سال قبل ہونا تھا لیکن افسوس کہ اس انتہائی اہمیت کے حامل مسئلے کو سیاست کی نذر کیا جاتا رہا۔
حجت الاسلام والمسلمین سید ساجد علی نقوی

:

پاکستان کسی کی ذاتی جاگیر نہیں

قائد ملت جعفریہ پاکستان نے کہا : مردم شماری جسے سات سال قبل ہونا تھا لیکن افسوس کہ اس انتہائی اہمیت کے حامل مسئلے کو سیاست کی نذر کیا جاتا رہا۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق قائد ملت جعفریہ پاکستان حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی نے مختلف وفود سے ملاقاتوں کے دوران کہا ہے کہ مردم شماری انتہائی ضروری لیکن افسوس یہ معاملہ بھی بسا اوقات سیاست کی نذر ہوتا رہا اور اس میں تاخیر بھی اسی وجہ سے کی جاتی رہی ۔

انہوں نے بیان کیا : اب جب کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کے بعد مردم شماری کا فیصلہ کیا گیا ہے تو تمام طبقات کو بھی مدنظر ر کھا جائے بالخصوص بہاری برادری جن کی تعداد ملک میں مشخص ہے انہیں بھی اس میں شمار کیا جائے، پاکستان کسی کی ذاتی جاگیر نہیں، تحریک پاکستان میں بابائے قوم کے ہم قدم چلنے والے تمام طبقات کو اس قومی عمل میں شامل کیا جائے۔

حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی نے کہا کہ مردم شماری جسے سات سال قبل ہونا تھا لیکن افسوس کہ اس انتہائی اہمیت کے حامل مسئلے کو سیاست کی نذر کیا جاتا رہا۔

انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کے بعد اب مردم شماری کا فیصلہ مارچ میں کرلیا گیا ہے تو ہم مطالبہ کرتے ہیں اس حوالے سے تمام طبقات کو بھی مد نظر رکھا جائے اور باالخصوص بہاری برادری کو اس میں شامل کیا جائے جن کی تعداد پاکستان میں مشخص ہے اور اگر کہیں اس حوالے سے کوئی شبہات ہیں تو اس کے خاتمے کیلئے باقاعدہ میکنزم تیار کیا جائے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کسی کی ذاتی جاگیر نہیں ، پاکستان قائد اعظم محمد علی جناحؒ کی تحریک پاکستان میں شامل ان تمام طبقات کی میراث ہے جنہوں نے اس عظیم جدوجہد میں اپنا کردار ادا کیا ، اس کردار کی کسی صورت نفی نہیں کی جاسکتی اور جوطبقات اس تحریک کی تفریق نہیں کرتے ان تمام طبقات کو اس قومی عمل میں شامل کیا جائے۔۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬