‫‫کیٹیگری‬ :
04 September 2016 - 18:13
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 423034
فونت
حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری:
مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ نے کہا : دشمن کی یہ چال تھی کہ ملت تشیع پاکستان اپنے شہداء اور ان کے افکار کو فراموش کر دیں، لیکن ہم نے شہداء کربلاء سمیت تمام شہداء کی یاد کو نہ صرف یاد رکھا بلکہ آئندہ نسلوں تک منتقل کیا۔
حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری

 

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری نے امامیہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے ۴۵ویں مرکزی نوید سحر کنونشن کے دوسرے روز آخری نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہا : اللہ رب العزت کا وعدہ ہے کہ شہداء کا لہو ہرگز رائیگاں نہیں جائیگا۔

انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا : دہشت گردوں نے ملت تشیع کو بیدردی سے نشانہ بنایا، اسی دہشت گردی کا نشانہ بن کر وطن عزیز میں ہمارے شہداء کی تعداد بیس ہزار سے متجاوز ہے۔

شب شہداء سے خطاب کرتے ہوئے حجت الاسلام راجہ ناصر عباس نے کہا : آج ان شہداء کی یاد میں یہ شب شہداء برپا کی گئی ہے جنہوں نے حقیقی شہادت کو رواج دیا۔

انہوں نے کہا : عظیم تر مقصد کے حصول کیلئے ان کی زندگی وقف جبکہ شہادت ان کیلئے پرلطف اور انتہائی شیریں تھی۔ مومن کیلئے شہادت نہایت شیریں ہے۔ ان شہداء نے اپنے لہو سے قوم کو نئی زندگی بخشی۔

قائد وحدت کا اپنے خطاب میں تاکید کی : شہداء کا خون ہرگز رائیگاں نہیں جاتا، کیونکہ یہ خداوند متعال کا وعدہ ہے۔ دشمن کی یہ چال تھی کہ ملت تشیع پاکستان اپنے شہداء اور ان کے افکار کو فراموش کر دیں، لیکن ہم نے شہداء کربلاء سمیت تمام شہداء کی یاد کو نہ صرف یاد رکھا بلکہ آئندہ نسلوں تک منتقل کیا۔

انہوں نے بیان کیا : ہم نے عزاداری کی بدولت شہداء کربلا کی مظلومیت کو بغاوت میں بدلنے والوں کو چودہ سو سال سے زندہ کیا۔ پاکستان کی سرزمین میں ۲۰ ہزار سے زائد شیعہ شہید ہیں۔ ہم نے شہداء اور انکی مظلومیت کو زندہ رکھا۔

شب شہداء سے خطاب کرتے ہوئے کہا : بھوک ہڑتال کیمپ میں تمام مکاتب فکر کے افراد آئے اور ہمارے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔ ہم نے یاد شہداء کو تکفیریت کے خوف اور پراکسی وار میں فراموش نہیں کیا۔

انہوں نے نیشنل ایکشن پلان کے حوالے سے عملی اقدات پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا : عظیم شہداء نے اپنے خون سے اپنی سچائی کے گواہی دی ہے۔ شہداء کے خون نے حکومتی بددیانتی کو بےنقاب کر دیا ہے، کیونکہ یہ تکفیری حکمرانوں نے پالے اور اب حکمران دہشتگردوں کو ختم نہیں، انہیں اپنے کنٹرول میں کرنا چاہتے ہیں۔

حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا : ہم سے دریافت کیا جاتا ہے کہ آپ نے بھوک ہڑتالی کیمپ سے کیا پایا تو میں کہتا ہوں کہ ہم نے اپنا فرض ادا کیا، کیونکہ ہم فقط کوشش کرسکتے ہیں، نتیجہ خدا کی طرف سے ہوتا ہے۔ امام راحل کی زندگی سے بھی ہمیں یہی درس ملتا ہے کہ اپنے فرض کے انجام دہی میں کوتاہی نہ کریں۔ شہید قائد عارف الحسینی پیش رو قائد ہے، وہ آج بھی ہمارے قائد ہیں۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬