‫‫کیٹیگری‬ :
15 September 2016 - 09:33
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 423239
فونت
قائد انقلاب اسلامی:
قائد انقلاب اسلامی نے کہا : ملک کے اندر صحیح، بجا اور کارآمد فیصلے ہوں، اس کے لئے ضروری ہے کہ عوام اس مہم میں شرکت کریں اور شماریاتی اداروں کو درست اور پختہ اطلاعات فراہم کریں۔
قائد انقلاب اسلامی کے ساتھ ایران کے مردم شماری تنظیم کے حکام

 

رسا نیوز ایجنسی کا قائد انقلاب اسلامی کی خبر رساں سائیٹ سے منقول رپورٹ کے مطابق قائد انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے آبادی اور مکانات کے ادارہ شماریات نیز ملک کی سپریم کونسل برائے شماریات کے عہدیداروں سے ملاقات میں ٹھوس علمی اعداد و شمار اور پختہ اطلاعات کو ملک کے کارآمد فیصلوں کی اصلی بنیاد قرار دیتے ہوئے فرمایا کہ عوام کو چاہئے کہ مردم شماری کی مہم میں سنجیدگی کے ساتھ حصہ لیں۔

قائد انقلاب اسلامی نے اعداد و شمار کو ملک کے گوناگوں وسائل اور احتیاجات کے بارے میں منصوبوں کے لئے بہت اہم ضرورت قرار دیا اور فرمایا کہ ملک کے اندر صحیح، بجا اور کارآمد فیصلے ہوں، اس کے لئے ضروری ہے کہ عوام اس مہم میں شرکت کریں اور شماریاتی اداروں کو درست اور پختہ اطلاعات فراہم کریں۔

آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے اپنے خطاب میں شمارش کے امور انجام دینے والے عہدیداروں سے فرمایا کہ اعداد و شمار میں موجودہ صورت حال بھی پوری درستگی کے ساتھ بیان کی جائے، اسی طرح تبدیلیوں کے عمل کا بھی جائزہ لیا جائے، تاکہ موجودہ زمانے میں جب تبدیلی کی رفتار بہت تیز ہے، عہدیداران ان تبدیلیوں کے رونما ہونے کے باعث یکببارگی کسی غیر متوقع صورت حال سے روبرو نہ ہوں۔

قائد انقلاب اسلامی نے اعداد و شمار کی درستگی کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے اور غلط اعداد و شمار سے ملک کے اعتبار کو پہنچنے والے نقصان کی جانب اشارہ کرتے ہوئے فرمایا کہ اعداد و شمار کے عمل کے اعتبار سے ملک پیچھے ہے، چنانچہ بعض عہدیداران بھی بعض شعبوں کے بارے میں صحیح اعداد و شمار سے واقف نہیں ہیں۔

قائد انقلاب اسلامی نے نالج بیسڈ اکانومی میں اعداد و شمار کی بنیادی اہمیت کی مثال پیش کرتے ہوئے فرمایا کہ نالج بیسڈ معیشت جو ملکی ترقی کا راستہ ہے، فی الواقع تعلیم یافتہ اور خلاقی صلاحیت رکھنے والی افرادی قوت پر استوار ہے، لہذا واضح ہونا چاہئے کہ ہر اقتصادی و فنی شعبے میں باصلاحیت و صاحب استعداد نوجوانوں کی کتنی تعداد ہے۔

قائد انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے استقامتی معیشت میں بھی اعداد و شمار کی فیصلہ کن اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے فرمایا کہ ملکی مشکلات کا حقیقی حل استقامتی معیشت ہے اور اگر دنیا کے سارے راستے ہمارے لئے کھل جائیں تب بھی اگر ملکی معیشت اندرونی طور پر پنپنے اور نمو پانے والی نہ ہوگی تو انجام شکست کے علاوہ کچھ نہیں ہوگا۔

قائد انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ استقامتی معیشت کو عملی جامہ پہنانے کے لئے ملک کے اندر پیداواری صورت حال، پیداواری یونٹوں اور ان کی ضرورتوں کے صحیح اعداد و شمار کی اطلاعات کا موجود ہونا ہے۔

قائد انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای کا کہنا تھا کہ ملک کے فیصلہ ساز اور پالیسی ساز اداروں اور رائے عامہ تشکیل دینے والے افراد کو بروقت اعداد و شمار کی صحیح اطلاعات فراہم کرنا بہت ضروری ہے۔

قائد انقلاب اسلامی نے آبادی کے بڑھاپے کی جانب بڑھتے قدم اور آبادی کم کرنے کی پالیسیوں کے غلط تسلسل کا حوالہ دیتے ہوئے فرمایا کہ سنہ اسی کے عشرے میں آبادی کی چار فیصدی کی شرح نمو کے لئے راہ حل کی ضرورت تھی اور راہ حل آبادی کے اضافے کی شرح میں کمی لانا تھا، مگر بعد میں اس پالیسی کا تسلسل متعلقہ عہدیداران کی جانب سے بروقت صحیح اعداد و شمار پیش کئے جانے کی بنیاد پر کند یا بند کر دیا جانا چاہئے تھا، کیونکہ آبادی کا بوڑھا ہونا ایسی مشکل ہے جس کا علاج نہیں ہے اور آج ترقی یافتہ ملکوں کے پاس بھی اس مشکل کا حل نہیں ہے۔

قائد انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے شماریاتی اداروں کے اعداد و شمار میں اختلاف کو بہت بڑی مشکل قرار دیا اور فرمایا کہ کبھی کبھی بے روزگاری، افراط زر اور اقتصادی نمو کی شرح کے بارے میں الگ الگ اعداد و شمار دئے جاتے ہیں جس کی وجہ سے عوام کے اندر بے یقینی اور عدم اعتماد کی کیفیت پیدا ہوتی ہے۔

قائد انقلاب اسلامی نے سابقہ حکومت کے اعداد و شمار کو بعد کی حکومت کے ذریعے غلط قرار دئے جانے کا حوالہ دیتے ہوئے فرمایا کہ اس تضاد کی وجہ معلوم ہونی چاہئے، یعنی یا تو سابقہ دور میں اعداد و شمار بیان کرنے میں غلطی تھی یا پھر موجودہ دور میں غلط اعداد و شمار دئے جا رہے ہیں اور دونوں ہی صورت میں اعداد و شمار میں خرد برد جو باشعور عوام کی نگاہوں سے پوشیدہ نہیں ہے، بہت بڑا گناہ ہے۔

آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے زور دیکر کہا کہ ایک بنیادی کام شماریات کے امور کا ایک مرکز میں اور ایک علمی اور متفق علیہ روش پر مرکوز کیا جانا ہے۔ آپ نے اطلاعات جمع کرنے کے جدید وسائل کو بروئے کار لانے پر زور دیا اور فرمایا کہ مردم شماری کے نتیجے کے اعلان میں تاخیر نہیں ہونی چاہئے۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬