‫‫کیٹیگری‬ :
09 October 2017 - 09:52
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 430294
فونت
عباس کمیلی :
مولانا حسن ظفر نقوی نے عباس کمیلی اور ناظر تقوی کے وفد کے ہمراہ ملاقات کیلئے آنے اور حمایت و اظہار یکجہتی کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ جیل بھرو تحریک تمام لاپتہ شیعہ افراد کی بازیابی تک ہر صورت جاری و ساری رہے گی۔
پاکستان کے دینی رھنما

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، سابق سینیٹر عباس کمیلی کی سربراہی میں جعفریہ الائنس پاکستان اور مولانا ناظر عباس تقوی کی سربراہی میں شیعہ علماء کونسل کے نمانئدہ وفد نے کراچی کے بغدادی تھانے میں لاپتہ شیعہ افراد کی عدم بازیابی کے خلاف احتجاجاً گرفتاری دینے والے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنرل مولانا حسن ظفر نقوی و دیگر افراد سے ملاقات کرکے اظہار یکجہتی اور جیل بھرو تحریک کی مکمل حمایت کا اعلان کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بغدادی تھانے میں مولانا حسن ظفر نقوی سے ملاقات کرتے ہوئے جعفریہ الائنس پاکستان کے سربراہ سابق سینیٹر عباس کمیلی نے لاپتہ شیعہ افراد کی عدم بازیابی اور شیعہ مسلمانوں کے بنیادی آئینی و قانونی حقوق کی خلاف ورزی کے خلاف شروع کی گئی جیل بھرو تحریک کی مکمل حمایت کا اعلان کیا ہے۔

دوسری جانب شیعہ علماء کونسل سندھ کے صدر مولانا ناظر عباس تقوی نے بھی وفد کے ہمراہ مولانا حسن ظفر نقوی سے ملاقات کرتے ہوئے لاپتہ شیعہ افراد کی بازیابی کیلئے شروع کی گئی جیل بھرو تحریک کے سلسلے میں احتجاجاً اپنی گرفتاری پیش کرنے والے تمام افراد سے اظہار یکجہتی کیا اور انہیں اپنی جماعت کی طرف سے مکمل حمایت اور تعاون کا یقین دلایا۔

عباس کمیلی اور مولانا ناظر تقوی نے کہا کہ محب وطن بے گناہ شیعہ افراد کی جبری گمشدگی نے ان تمام لاپتہ شیعہ افراد کے خاندانوں کیلئے انتہائی شدید مشکلات کھڑی کر دی ہیں، لاپتہ شیعہ افراد کے خانوادے شدید مشکلات کا شکار ہو چکے ہیں، جن کی گزر بسر کی و مالی آسودگی کی ذمہ داری ان لاپتہ شیعہ افراد کے کاندھوں پر تھی، بے گناہ شیعہ افراد کو جبری گمشدہ و لاپتہ کرنا انکے خاندانوں کے معاشی قتل کے مترادف ہے اور متاثرہ خانوادے در در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملت جعفریہ اپنے بے گناہ اسیروں کی بازیابی تک خاموش نہیں بیٹھے گی، ہم ملت جعفرہ پُرامن لوگ ہیں، ہمارا موازنہ دہشتگردوں اور قاتلوں کے ساتھ نہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ جیل بھرو تحریک پوری ملت جعفریہ کی تحریک ہے، جو لاپتہ شیعہ افراد کی بازیابی تک مسلسل جاری رہے گی، ہم اپنا آئینی اور قانونی حق مانگ رہے ہیں، اگر ہمارے افراد کا نام کسی کیس میں ہے، تو انہیں فی الفور عدالتوں میں پیش کیا جائے اور اگر ان پر الزام نہیں ہے تو انہیں رہا کیا جائے۔

مولاناحسن ظفر نقوی نے عباس کمیلی اور علامہ ناظر تقوی کے وفد کے ہمراہ ملاقات کیلئے آنے اور حمایت و اظہار یکجہتی کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا اور اس عزم کا اعادہ کیا کہ جیل بھرو تحریک تمام لاپتہ شیعہ افراد کی بازیابی تک ہر صورت جاری و ساری رہے گی۔ /۹۸۸/ ن۹۴۰

 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬