‫‫کیٹیگری‬ :
29 July 2016 - 06:31
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 422562
فونت
مجلس وحدت مسلمین پاکستان:
مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ کراچی کی جانب سے اسلام آباد میں ۷ اگست کو ہونے والے تاریخی قومی اجتماع کے حوالے سے شہر کے مختلف علاقوں میں عوامی رابطہ مہم کا سلسلہ جاری ۔
مجلس وحدت مسلمین پاکستان


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے زیراہتمام ۷ اگست کو اسلام آباد میں شہید قائد شہید عارف حسین الحسینی کی برسی کے موقع پر تاریخی قومی اجتماع کے حوالے سے ملک بھر کی طرح کراچی میں بھی بھرپور عوامی رابطہ مہم کا آغاز کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایم ڈبلیو ایم کراچی کی جانب سے اسلام آباد میں ۷ اگست کو ہونے والے تاریخی قومی اجتماع کے حوالے سے شہر کے مختلف علاقوں میں عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں کارنر میٹنگز اور اجلاس منعقد کئے گئے، جن سے عالی جناب نشان حیدر ساجدی، عالی جناب علی انور،عالی جناب مبشر حسن، عالی جناب صادق جعفری،میثم عابدی و دیگر نے خطاب کی ۔

اس خطاب میں مقررین نے ۷ اگست کو اسلام آباد میں منعقد ہونے والے تاریخی قومی اجتماع بمناسبت برسی شہید قائد عارف حسین الحسینی پر تفصیلی گفتگو کی۔

انہوں نے بتایا کہ اسلام آباد میں منعقدہ قومی اجتماع میں کراچی سے بھی ہزاروں کی تعداد کارکنان و عوام شریک ہونگے، یہ قومی اجتماع اسلام آباد کی تاریخ کا سب سے بڑا اجتماع ثابت ہو گا۔

رہنماؤں نے بیان کیا : ۷ اگست کا قومی اجتماع ملک سے دہشتگردی اور تکفیریت کے خاتمے کے حوالے اہم سنگ میل ثابت ہوگا، قومی اجتماع میں ملک بھر سے شریک ہونے والے لاکھوں مرد و خواتین ملک کو حقیقی معنوں میں قائد و اقبال کا پاکستان بنانے کیلئے شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی سے تجدید عہد کرینگے۔

رہنماؤں نے کہا : علامہ عارف حسینی کی آواز پاکستان میں عالمی استعمار و طاغوت اور نئے نمک خوار ایجنٹوں کے خلاف جرات مندانہ للکار تھی، ہم بھی اپنے اس عظیم قائد کے مشن کو پوری ذمہ داری کے ساتھ آگے بڑھاتے ہوئے اس پر گامزن رہیں گے۔

انہوں نے تاکید کی : علامہ عارف حسینی وحدت و اخوت کے حقیقی داعی تھے، آپ ملک میں شیعہ سنی اتحاد واخوت کے داعی تھے، جس ک خاطر آپ نے اپنی جان کا نذرانہ دینے سے بھی درغ نہیں کیا، آپ کی ساری زندگی اسلام کی سربلندی اور وطن عزیز کے استحکام کی جدوجہد میں گزری۔

رہنماؤں نے بیان کیا : اگر نواز حکومت نے ہوش کے ناخن نہ لئے اور دہشتگردی کی سرپرستی اور حمایت پر مبنی پالیسیاں ختم نہیں کیں تو نواز حکومت کو تاریخ کا حصہ بنا دیا جائیگا۔ کراچی سے ہزاروں کی تعداد میں کارکنان و عوام کی شرکت کے پیش نظر ایم ڈبلیو ایم نے انتظامی حوالے سے مختلف کمیٹیاں تشکیل دے دی ہیں اور سندھ حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ کراچی سمیت سندھ بھر سے جانے والے قافلوں کی سیکورٹی کیلئے فول پروف انتظامات کو یقینی بنایا جائے۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬