‫‫کیٹیگری‬ :
26 July 2017 - 18:18
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 429184
فونت
صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا ہے کہ تہران امریکی کانگریس کے تازہ ایران مخالف اقدامات کا ٹھوس جواب دے گا۔
حجت الاسلام حسن روحانی

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، بدھ کے روز کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر حسن روحانی نے کہا کہ امریکہ پچھلے چالیس برس سے دباؤ، پابندیوں نیز خطے کے بعض ملکوں کو ایران کے خلاف اکساتا چلا آیا ہے اور تمام معاملات میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

انہوں نے کہاکہ، امریکہ کو ملت ایران کے مقابلے میں اپنی پے درپے شکست سے عبرت حاصل کرنا چاہیے۔ صدر حسن روحانی نے کہا کہ اگر امریکہ مشرق وسطی کے حساس علاقے میں امن و استحکام کا خواہاں ہے اور چاہتا ہے کہ اس علاقے کی حساس سمندری گزرگاہ پوری دنیا کے لیے محفوظ بنی رہے تو اسے اپنی موجودہ پالیسیوں کو تبدیل کرنا ہوگا۔

صدر ایران نے دو ٹوک الفاظ میں میں کہا کہ ایران کے عوام سازشوں میں آنے والے نہیں ہیں اور اپنے راستے پر گامزن رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ امریکہ ایرانی عوام کے حقوق کا احترام کرے اور یہ بات اچھی طرح ذہن نشین کرلے کہ قوموں کے احترام، ان کے حقوق کی بالادستی اور امن و صلح کا راستہ اپنا کر ہی امریکی عوام کے مفادات کا تحفظ کیا جاسکتا ہے۔

صدر ایران نے کہا کہ امریکہ صرف اسلامی جمہوری نظام کا دشمن نہیں ہے بلکہ اسے ایران کی استقامت و پائیداری اور اس کا رول ماڈل بننا بھی برداشت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ یہ بات بھی قبول کرنے کو تیار نہیں ہے کہ اس حساس علاقے میں ایران خود مختار اور موثر ملک بن گیا ہے۔

ڈاکٹر حسن روحانی نے ایران کی طاقت میں اضافے اور دفاع کو مضبوط بنائے جانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ، اسلامی جمہوریہ ایران اپنے بارے میں دیگر ملکوں کی پالیسیوں کو مد نظر رکھتے ہوئے دفاعی ہتھیاروں کی تقویت کرے گا اور ایران کے عوام، اپنی مسلح افواج کے تمام دستوں، سپاہ پاسداران ، فوج، عوامی رضاکار فورس، پولیس اور دیگر سیکورٹی اداروں کی بھر پور حمایت کرتے رہیں۔/۹۸۸/ ن۹۴۰

 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬