‫‫کیٹیگری‬ :
26 April 2017 - 15:41
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 427743
فونت
حجت الاسلام و المسلمین راجہ ناصر عباس جعفری:
ایم ڈبلیو ایم پاکستان کے جنرل سکریٹری نے پاراچنار دھماکے پر اپنے ردعمل کا اظھار کرتے ہوئے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کے زبانی نعروں سے امن قائم نہیں ہوسکتا۔
راجہ ناصر عباس جعفری

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی جنرل  سیکرٹری حجت الاسلام و المسلمین راجہ ناصر عباس جعفری نے پاکستان کے قبائلی علاقے کُرم ایجنسی میں دھماکے کے نتیجے میں 13 سے زائد قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ گودر سے محنت مزدوری کرنے کے لئے پارا چنار آنے والے بےگناہ افراد اور معصوم بچوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانے والے وحشی اور انسانیت کے دشمن ہیں اور کسی معافی کے مستحق نہیں۔

انہوں نے کہا کہ دہشتگردی کے خلاف جاری جنگ کے پورے ملک میں مثبت نتائج سامنے آ رہے ہیں، تاہم کُرم ایجنسی میں محدود عرصے کے دوران دہشت گردی کے تین بڑے واقعات کا رونما ہونا متعلقہ سکیورٹی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشانہ ہے۔ شیعہ اکثریتی آبادی والے علاقے میں دہشتگردی کے واقعات پر قابو نہ پایا جانا ملت تشیع کے لئے تشویش کا باعث ہے۔

انہوں نے کہا کہ پولیٹیکل انتظامیہ کی طرف سے مقامی افراد کو موثر تحفظ فراہم نہ کرنے کا اعلٰی حکام کو نوٹس لینا چاہیے۔ ایسے متعصب افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جانی چاہیے جو دہشت گردوں کے لئے ان کے اہداف کے حصول میں معاون کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ چیک پوسٹوں سے رضاکاروں کو ہٹا کر دہشت گردوں کو محفوظ راستہ دیا جا رہا ہے، جس کے بھیانک نتائج سامنے آنے شروع ہوچکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آپریشن ردالفساد کے ساتھ ساتھ نیشنل ایکشن پلان پر بھی عمل کیا جائے۔ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کے زبانی نعروں سے امن قائم نہیں ہوسکتا۔ ملک کو دہشت گردوں سے پاک کرنے کے لئے سہولت کاروں کے خلاف بھرپور آپریشن وقت کی اہم ضرورت ہے۔ پاکستان کی سالمیت و استحکام کو مقدم رکھتے ہوئے حکومتی صفوں اور قومی اداروں کو ایسے لوگوں سے پاک کیا جائے، جو دہشت گردوں کے سہولت کار کے طور پر اپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں۔/۹۸۸/ ن۹۴۰

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬