07 September 2016 - 17:23
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 423082
فونت
حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی :
قائد ملت جعفریہ پاکستان نے کہا : عوام کو امن و سکون کی فراہمی، ان کے مذہبی حقوق اور شہری آزادیوں کے تحفظ کے لئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔
قائد ملت جعفریہ پاکستان

 

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق قائد ملت جعفریہ پاکستان حجت الاسلام سید ساجد علی نقوی نے یوم دفاع کی مناسبت سے منعقدہ تقریب میں دفاع پاکستان کے تمام شہداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا : پاکستان کی سلامتی اور خود مختاری کے دفاع کے لئے پاک فوج نے ماضی میں جو کارنامے انجام دیئے ہیں، وہ ہمیں اس بات کی طرف متوجہ کرتے ہیں کہ ہم ملکی سلامتی اور دفاع کے لئے کسی قربانی سے دریغ نہ کریں۔

انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے بیان کیا : ہماری توجہ اس نکتے کی طرف بھی مرکوز رہنی چاہیئے کہ اگر پاک فوج اپنی پیشہ وارانہ صلاحیتوں تک محدود رہے تو وہ بہترین انداز میں پاکستان کا دفاع اور ملکی سلامتی کا تحفظ کر سکتی ہے۔

شیعہ علماء کونسل پاکستان کے سربراہ نے بیان کیا : ایک طرف سرحدوں پر ازلی دشمن جارحیت دکھا رہا ہے تو دوسری طرف ملک کے اندر ملک دشمن سفاک دہشت گرد، ٹارگٹ کلر اور بدامنی پھیلانے والے عناصر سرگرم عمل ہیں، ضرب عضب آپریشن کا دائرہ ملک کے دیگر شہروں تک پھیلانے کے مثبت اثرات ظاہر ہوئے ہیں، اسی طرح نیشنل ایکشن پلان پر عمل در آمد بھی ملکی مفاد میں ہے۔

انہوں نے تاکید کرتے ہوئے کہا : ان حالات میں حکمرانوں اور ملکی دفاع و سلامتی کے اداروں کی اولین ذمہ داری ہے کہ وہ ملک میں موجود بحرانوں کے خاتمے کے لئے اپنا کردار ادا کریں، ملکی سلامتی قومی یکجہتی کو مقدم خیال کرتے ہوئے سرحدوں کے دفاع کو باہم متحد ہوکر یقینی بنایا جائے ۔

قائد ملت جعفریہ پاکستان نے بیان کیا : عوام کو امن و سکون کی فراہمی، ان کے مذہبی حقوق اور شہری آزادیوں کے تحفظ کے لئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے۔

حجت الاسلام ساجد نقوی نے دفاع پاکستان کی جنگ میں شہید ہونے والے تمام شہداء کو خراج عقیدت اور غازیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے پاکستانی عوام سے اپیل کی کہ اپنے اندر وحدت و اتحاد پیدا کریں اور ہر قسم کے فرقہ وارنہ، مسلکی، فروعی، لسانی، گروہی اور ذاتی مفادات کو پس پشت ڈال کر اسلام اور پاکستان کو اپنی پہلی ترجیح قرار دے کر خدمت کا عہد کریں۔/988/الف940/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬