08 December 2016 - 11:35
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 424932
فونت
آغا سید علی رضوی :
ناموس فروشی سے متعلق عوامی نمائندوں کا جنسی سیکنڈل پرنٹ اور سوشل میڈیا میں طشت از بام ہوگیا ہے اورعوامی حق رائے دہی سے منتخب ہونے والے یہ اراکین نہ معلوم کتنی ایسی گھنائونی سازشوں کا ارتکاب کررہے ہونگے جو عوام کی نظروں سے ابھی تک پوشیدہ ہیں۔
آغا سید علی رضوی

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل آغا سید علی رضوی نے کہا : ایسا گھنائونا کاروبار ایسے ہی بے ضمیر اور قوم فروش (بڑوں) کے سائے میں پروان چڑھ رہا ہے اور پورے علاقے کی عزت مغربی ثقافتی یلغا ر میںبہہ رہی ہے اور کتنے بے غیرت ـ" ثقافت پرست" مفاد حاصل کررہے ہیں۔لہٰذا عدل،انصاف، غیرت اور علاقے کے عوام کی اسلام پسندی کا تقاضا یہ ہے کہ حکومت لیت و لعل سے کام لینے اور مقامی اخبارات کی سانس تک کو روکنے کی بجائے عادل،باضمیر اور قابل لوگوں پر مشتمل کمیٹی بناکر فوری انکوائری کی جائے اور حقائق کو گلگت بلتستان کے عوام کے سامنے لایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ ان ناموس فروشوں کا جرم ناقابل معافی ہے لہٰذا ان کی اسمبلی / کونسل رکنیت فوری طور پر ختم کرکے عمر بھر کیلئے انہیں رسوا کیا جائے تاکہ آئندہ کسی کو اس قسم کے جرم کے ارتکاب کی جرات نہ ہوسکے۔

انہوں نے کہا کہ سرکاری مشینری کے ساتھ ساتھ اب اسمبلی اراکین نے بھی دلالی میں ید طولیٰ حاصل کرلی ہے اور ان غیر اخلاقی حرکات کے مرتکب وہی افراد ہوسکتے ہیں جن کا اپنا کوئی حسب نسب نہیں۔

وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان محض ایک تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دیکر اس گھنائونے جرم کے مرتکب اپنے پیاروں کے کرتوتوں پر پردہ ڈالنا چاہتے ہیں ۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬