13 April 2017 - 14:37
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 427467
فونت
روس نے سلامتی کونسل میں شام کے خلاف قرارداد کو حقائق سے عاری قراردیتے ہوئے ویٹو کردیا ہے ۔
روس نے کیا وٹو

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق روس نے سلامتی کونسل میں شام کے خلاف قرارداد کو حقائق سے عاری قراردیتے ہوئے ویٹو کردیا ہے ۔

شام کے خلاف قرارداد اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں امریکہ، فرانس اور برطانیہ نے پیش کی تھی۔

سلامتی کونسل کی قرارداد میں شمالی شام کے شہر ادلب میں ہونے والے مبینہ کیمیائی حملے کی مذمت کرتے ہوئے شامی حکومت سے معاملے کی فوری تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

برطانیہ، فرانس اور امریکہ کی ڈرافٹ کردہ اس قرارداد کے حق میں 10 ووٹ آئے جبکہ روس اور بولیویا نے مخالفت کی، دوسری جانب چین، قزاقستان اور ایتھوپیا نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا۔

واضح رہے کہ یہ آٹھواں موقع ہے جب روس نے شام کے خلاف کسی قرارداد کو ویٹو کیا۔

ووٹنگ سے قبل روسی سفیر ولادی میر سیفرنکوو نے کونسل سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ یہ قرارداد غیر ضروری اور حقائق سے عاری ہے اور مغربی طاقتوں کی جانب سے مبینہ کیمیائی حملے میں شامی حکومت کو ملوث سمجھنا قبل از وقت ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ اور اس کے اتحادیوں نے خود دہشت گردوں کو کیمیائی ہتھیار فراہم کئے ہیں اور امریکہ کیمیائی ہتھیاروں کو بہانہ بنا کر شام پر میزائل حملہ بھی کرچکا ہے جبکہ شام کے پاس کیمیائی ہتھیار موجود نہیں ہیں جس کی تائید خود اقوام متحدہ پہلے ہی کرچکی ہیں۔

لہذا امریکہ اپنے اتحادیوں کو خوش کرنے کے لئے شام کے خلاف غیر قانونی زورآزمائی کررہا ہے جسے روس اور اس کے اتحادی ناکام بنا رہا ہے۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬