04 June 2017 - 13:10
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 428381
فونت
کابل میں نماز جنازہ کے درمیان اللہ اکبر کے نعرہ کے ساتھ تین خودکش دھماکہ کار نے دھماکہ کیا جس میں۲۰ افراد ہلاک اور ۲۵ زخمی ہوگئے ہیں ۔
 دھماکہ

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق افغانستان کے دارالحکومت کابل میں افغان رکن پارلیمنٹ کے بیٹے کی نماز جنازہ اور تدفین کے موقع پروہابی دہشت گردوں  یکے بعد دیگرے ہونے والے 3 بم دھماکوں میں کم سے کم 20 افراد ہلاک اور 25 زخمی ہوگئے ہیں۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق تدفین میں شریک افغان چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ بال بال بچ گئے۔

افغان سینیٹر محمد عالم ایزدیار کا نوجوان بیٹا جمعہ 2 جون کو کابل میں ہونے والے پرتشدد مظاہروں کے دوران فائرنگ سے ہلاک ہوا، جن میں دیگر 3 افراد ہلاک ہوئے تھے ۔

مظاہرے گزشتہ ماہ 31 مئی کو کابل میں جرمنی کے قونصل خانے کے باہر ہونے والے بم دھماکے کے خلاف کئے گئے ، جس میں 100 افراد ہلاک ہوئے تھے جبکہ 500 افراد زخمی ہوئے۔ افغان روزہ دار مسلمانوں پر حملے کی ذمہ داری سعودی عرب سے منسلک وہابی دہشت گرد تنظیم داعش نے قبول کرلی ہے۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬