07 September 2017 - 10:44
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 429819
فونت
ایران کے بزرگ علماء ، مراجع تقلید اور ایران کے دینی مدارس کے امور کے مرکز نے میانمار میں مظلوم مسلمانوں کے قتل عام کی مذمت کرتے ہوئے ان ہولناک جرائم پر انسانی حقوق کے اداروں کی خاموشی پر تنقید کی ہے۔
mayanmar

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق بزرگ مرجع تقلید آیت اللہ العظمی لطف اللہ صافی گلپائگانی نے جمعرات کو مسلمانوں کے قتل عام میں میانمار حکومت کے وحشیانہ جرائم کی مذمت کرتے ہوئے تاکید کے ساتھ مطالبہ کیا کہ اسلامی حکومتیں خاص طور سے اسلامی جمہوریہ ایران میانمار کے مسلمانوں کا قتل رکوانےاور اس کی مذمت کے لئے فوری طور پر بھرپور اقدام کرے۔

آیت اللہ صافی گلپائگانی نے تاکید کے ساتھ کہا کہ میانمار کے مسلمان مردوں ، عورتوں، بچوں اور بوڑھوں کے قتل عام پر خاموش نہیں رہنا چاہئے۔

انھوں نے اسلامی تعاون تنظیم سے مطالبہ کیا کہ  ہنگامی اجلاس بلا کر میانمار میں ہونے والے ان جرائم کا مقابلہ کرنے اور انھیں رکوانے کے لئے مضبوط فیصلہ کیا جائے۔

ایران کے دینی مدارس کے انتظامی امور کے مرکز نے ایک بیان جاری کر کے تاکید کی ہے کہ میانمار کے نہتے مسلمانوں کا نہایت بے دردی و سفاکی کے ساتھ قتل عام، انسانی حقوق کے دعویداروں کے ماتھے پر کلنک کا ایک اور ٹیکہ ہے۔

ایران کے دینی مدارس کے مرکز نے دنیا کے حریت پسندوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ متحد ہو کر مظلوم روہنگیا مسلمانوں کا ساتھ دیں اور ان کی صدائے مظلومیت کا جواب دیں۔

تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سربراہ آیت اللہ محمود ہاشمی شاہرودی نے بھی ایک بیان میں میانمار کے مسلمانوں کے قتل عام کی مذمت کرتے ہوئے علماء عالم اسلام کو، عالمی سامراج کی شیطانی سازشوں کا مقابلہ کرنے میں مسلمانوں کی مدد کرنے، اسلامی حکومتوں کو میانمار کے مسلمانوں کے خلاف جرائم رکوانے میں مدد نیز اسلام کے ابدی دشمنوں کے مقابلے میں مسلم امۃ کے درمیان اتحاد و یکجہتی کے تحفظ کی دعوت دی ہے۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬