29 October 2017 - 23:50
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 431584
فونت
حجت الاسلام مقصودعلی ڈومکی نے کہا کہ ہم مسلسل مطالبہ کرتے رہے کہ سانحہ جیکب آباد، شکارپور، سہون شریف کو فوجی عدالتوں میں بھیجا جائے ۔
حجت الاسلام مقصودعلی ڈومکی

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین ضلع جیکب آباد اور وارثان شہداء کمیٹی کے زیر اہتمام سانحہ شب عاشور کے شہداء کی دوسری برسی منائی گئی۔

برسی کے موقع پر منعقدہ عظمت شہداء کانفرنس سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنرل سید ناصر عباس جعفری، مرکزی ترجمان حجت الاسلام مختار احمد امامی، صوبائی سیکریٹری جنرل حجت الاسلام مقصودعلی ڈومکی، ممتاز عالم دین حجت الاسلام سیدعالم شاہ موسوی، مولانا سید محمد مٹھل شاہ،مولانا محمد علی شر، ظہیر حسین حیدری اور ضلعی سیکریٹری جنرل مولانا سیف علی ڈومکی نے خطاب کیا۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سید ناصر عباس شیرازی نے کہا کہ دو سال سے شہداء کے وارث انصاف کے لئے حکمرانوں سے اپیل کررہے ہیں، مگر انصاف ملنا تو کیا سارے قاتل دھشت گردوں کو باعزت بری کرکے عدل وانصاف کا قتل کیا گیا۔

حجت الاسلام مقصودعلی ڈومکی نے کہا کہ ہم مسلسل مطالبہ کرتے رہے کہ سانحہ جیکب آباد، شکارپور، سہون شریف کو فوجی عدالتوں میں بھیجا جائے، تاکہ عوام کو پتہ چلے کہ فوجی عدالتیں عوام کے لئے بنی ہیں۔ مگر ملک کا کوئی ادارہ ہمیں انصاف دینے کے لئے تیار نہیں۔

مگر قاتل دھشت گرد آزاد ہیں اس لئے دھشت گردی ختم نہیں ہورہی، فتح پور شریف اور سہون شریف میں دھشت گردی کا المناک سانحہ انہی دھشت گردوں کی کاروائی ہے جو اس سے قبل بھی اولیائے کرام کے مزارات کو نشانہ بناتے رہے ہیں۔ اگر ملکی ادارے اور عدالتیں دھشت گردوں کو سزا دیتیں تو آئے روز کا قتل عام رک جاتا۔

گذشتہ ہفتے جیکب آبادکے حافظ احمد خان کو سریاب روڈ کوئٹہ میں تکفیری دھشت گردوں نے دن دھاڑے قتل کر دیا، کوئٹہ معصوم انسانوں کے لئے مقتل گاہ بن چکا ہے۔ بلوچستان میں دھشت گردی کے اڈے اہل بلوچستان اور سندہ کے عوام کے لئے خطرہ ہیں۔ کیونکہ بلوچستان سے آنے والے دھشت گرد سندہ میں موجود سہولت کاروں کی مدد سے واردات کرتے ہیں۔ اور ا ب سندہ کے مختلف علاقوں میں بھی دھشت گردی کے تربیتی مراکز قائم کئے گئے ہیں۔

اس موقع پر مطالبہ کیا گیا۔

۱۔ شہداء شب عاشور جیکب آباد کے قتل میں ملوث مجرموں کو عبرتناک سزا دی جائے، شہداء کا کیس ری اوپن کیاجائے ۔

۲۔ سندہ حکومت وارثان شہدائے شکارپور و جیکب آباد سے کئے گئے معاہدے پر عمل در آمد کرے، اوروزیر اعلیٰ سندہ کے وعدے کے مطابق جیکب آباد میں یادگار شہداء ٹاور تعمیر کیا جائے۔

۳۔ شہید محمد شریف جتوئی کے قتل کی ایف آئی آر درج کرتے ہوئے اس بے گناہ شہید کے قتل میں ملوث عناصر کو بے نقاب کیا جائے۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬