‫‫کیٹیگری‬ :
29 April 2020 - 16:16
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 442606
فونت
پاکستان:
نشتر میڈیکل یونیورسٹی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنر پنجاب کا کہنا تھا کہ پنجاب میں ٹیلی میڈیسن ہیلپ لائن سنٹرز کے قیام کا تجربہ کامیاب رہا ہے، اب تک ہزاروں افراد گھر بیٹھ کر کورونا کے حوالے سے طبی راہنمائی حاصل کرچکے ہیں۔

رسا ںیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا ہے کہ کورونا وبا ختم نہیں ہو رہی بلکہ آنے والے دنوں میں اس میں مزید شدت آسکتی ہے، حکومت نے مزدور طبقہ کا خیال کرتے ہوئے لاک ڈاون میں نرمی کی، تاہم عوام احتیاطی تدابیر ترک نہ کریں۔

انہوں نے کہا کہ ماہ رمضان المبارک میں علماء اور مساجد انتظامیہ نے کورونا سے بچاو کیلئے حفاظتی اقدامات کو یقینی نہ بنایا تو ملک و قوم کیلئے اگلا ماہ نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے۔

گورنر پنجاب نے بتایا کہ جنوبی پنجاب کے ہسپتالوں کیلئے 5 ہزار پی پی آئی حفاظتی کٹس اور ہزاروں فیس شیلڈز فراہم کر دی گئی ہیں، تاکہ فرنٹ لائن پر وبا سے لڑنے سے والے ڈاکٹرز کو محفوظ رکھا جاسکے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملتان کے ایک روزہ دورہ کے دوران نشتر میڈیکل یونیورسٹی میں منعقدہ تقریب اور میڈیا کانفرس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

تقریب میں صوبائی وزیر توانائی ڈاکٹر اختر ملک، پارلیمانی سیکرٹری انفارمیشن ندیم قریشی، اراکین اسمبلی، ڈپٹی کمشنر عامر خٹک اور وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا سمیت ڈاکٹرز کمیونٹی نے شرکت کی۔

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت بغیر کسی سیاسی تفریق احساس پروگرام کے ذریعے ایک کروڑ 20 لاکھ سے زائد غریب خاندانوں کو فی کس 12ہزار دے رہی ہے جبکہ فلاحی تنظیموں کیساتھ مل کر پنجاب ڈویلپمنٹ نیٹ ورک کے ذریعے 5 لاکھ غر یب خاندانوں کو راشن بھی فراہم کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا کیخلاف فرنٹ لائن پر لڑنے والی افواج پاکستان، رینجرز، پولیس اور ڈاکٹرز سمیت دیگر طبی عملہ کو پوری قوم سلام پیش کرتی ہے اور ہم سب ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا کہ پہلے مرحلے میں ملتان اور بہاولپور ڈویژن کے ڈاکٹرز کیلئے 5 ہزار حفاظتی کٹس اور ڈاکٹرز کو حفاظتی شیلڈ بھی فراہم کر رہے ہیں، پنجاب میں جہاں بھی ڈاکٹرز کو حفاظتی سامان کی ضرورت ہوگی، ہم فراہمی یقینی بنائیں گے۔

ایک سوال کے جواب میں گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا کہ کورونا بحران سے بے روزگار ہونے والے غریب خاندانوں کیلئے ہم فلاحی تنظیموں کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں اور مکمل طور پر شفاف طریقے سے غریب خاندانوں کو راشن فراہم کر رہے ہیں۔

وزیراعظم کورونا ریلیف فنڈ میں گورنر ہاوس میں مخیرحضرات اور بزنس کیمونٹی نے 40 کروڑ روپے سے زائد جمع کروائے اور مجموعی طور پر ہم 3 ارب روپے کورونا بحران سے متاثر ہونیوالے افراد کیلئے راشن سمیت دیگر مد میں جمع کرچکے ہیں، جن کے ذریعے لاہور سمیت پنجاب کے دیگر شہروں میں پانچ لاکھ غریب خاندانوں کو راشن فراہم کر رہے ہیں۔

گور نر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا کہ پنجاب میں ٹیلی میڈیسن ہیلپ لائن سنٹرز کے قیام کا تجربہ کامیاب رہا ہے اور اب تک ہزاروں افراد گھر بیٹھ کر کورونا کے حوالے سے طبی راہنمائی حاصل کرچکے ہیں۔

گورنر پنجاب نے مزید کہا کہ کورونا کے خلاف جنگ میں ضلعی انتظامیہ اور پولیس سمیت تمام اداروں کی خدمات کو سراہتے ہیں، اراکین اسمبلی بھی اس مشکل وقت میں عوام کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ اس کڑے وقت سے نمٹنے کیلئے سینی ٹائیزرز اور دیگر حفاظتی سامان مقامی سطح پر تیار ہونا شروع ہوگیا ہے۔

گورنر پنجاب کا کہنا تھا کہ تمام یونیورسٹیوں میں قرآن پاک کے ترجمہ کے ساتھ لیکچرز شروع کئے جائیں گے، تاکہ نئی نسل کو قرآن کی تعلیمات سے روشناس کرایا جاسکے۔/۹۸۸/ن

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬