13 July 2016 - 04:29
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 422485
فونت
اسدالدین اویسی:
آل انڈیا مجلس اتحاد المسلین کے سربراہ نے کہا : بلا شبہ داعش کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں مگر یہ ہمارے درمیان ہی موجود ہیں۔ اب یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم انہیں ڈھونڈ نکالیں اور ان کا خاتمہ کردیں۔
اسدالدین اویسی


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق آل انڈیا مجلس اتحاد المسلین کے سربراہ اسدالدین اویسی نے عراق وشام میں برسرپیکار وہابی دہشت گرد تنظیم داعش کو جہنمی کتے قراردیتے ہوئے کہا : داعش کے سربراہ ابو بکر بغدادی اگر مسلمانوں کو مل گئے تو اس کے 100 ٹکڑے کردیئے جائیں گے ۔

اسد الدین اویسی نے داعش کی طرف سے مسجد النبی پر حملہ کئے جانے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے اس فکر کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے بیان کیا : داعش دہشت گرد در حقیقت جہنم کے کتے ہیں اور اگر اس دنیا میں کسی حقیقی مسلمان کے ہاتھوں تک گیا تو دنیوی جہنم کا پہلے ہی مزہ چھا دیا جائے گا ۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق آل انڈیا مجلس اتحاد المسلین کے سربراہ نے مسجد نبوی کے قریب حملے کے خلاف اپنی جماعت کے احتجاجی جلوس سے خطاب کرتے ہوئے تاکید کی : داعش ایک جھوٹ ہے اور یہ مجرموں کا ٹولہ اور گروہ ہے۔ اس گروہ  کے دہشت گرد اور اس کا نام نہاد سربراہ جہنم کے کتے ہیں۔

اسد الدین ایسی نے ابوبکرالبغدادی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا : مسجد نبوی کے قریب حملہ کرکے تم نے مسلمانوں کو اتنا گہرا گھاﺅ دیا ہے کہ اسے لفظوں میں بیان کرنا ممکن نہیں۔ جن لوگوں نے مدینہ منورہ پر حملہ کیا ہے اللہ ان کا وجود یوں نابود کردے گا جیسے پانی میں نمک حل ہوتا ہے۔

انہوں نے بیان کیا : مدینہ منورہ پر حملہ کرکے داعش نے اپنی تباہی اور خاتمے کی بنیاد رکھ دی ہے۔ یہ اس کے نیست و نابود ہونے کا آغاز ہے۔

اسدالدین اویسی نے کہا : سابق امریکی صدر جارج بش اور برطانوی وزیراعظم ٹونی بلیئر نے داعش کی داغ بیل ڈالی  اور جارج بش اور ٹونی بلیئر نے داعش دہشت گرد تنظیم کو قائم کرکے انسانیت کو شدید خطرے سے دوچار کر دیا ہے۔ ان دونوں کے خلاف عالمی عدالت میں مقدمہ چلایا جانا چاہیے۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬