30 September 2016 - 19:10
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 423553
فونت
سعودی حکام کا کہنا ہے کہ امریکی کانگریس کی جانب سے گیارہ ستمبر کے حملوں میں مارے گئے لوگوں کے اہل خانہ کو سعودی عرب کے خلاف شکایت کرنے کا حق دینے کے قانون کی منظوری کے، خطرناک نتائج برآمد ہوں گے۔
 امریکا و آل سعود

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی وزارت خارجہ کے ایک عہدیدار نے امریکی کانگریس سے کہا ہے کہ وہ اس قانون کے خطرناک نتائج سے بچنے کے لئے ضروری تدابیر اپنائے۔

اس سعودی عہدیدار نے جو اپنا نام ظاہرنہیں کرنا چاہتا تھا، کہا کہ یہ قانون حکومت کو حاصل تحفط کے قانون کو کمزور کرتا ہے اور سبھی ملکوں منجملہ امریکہ  کے لئے بھی اس کے منفی نتائج برآمد ہوں گے۔

مذکورہ سعودی عہدیدار نے سعودی عرب کے خلاف پاس کئے گئے قانون جیسٹا کو انتہائی تشویشناک قرار دیا۔ سعودی عرب کی طرف سے یہ بیان ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب امریکی ایوان نمائندگان اور سینیٹ نے واضح اکثریت کے ساتھ جیسٹا نامی قانون پاس کر دیا۔

اس قانون کے مطابق گیارہ ستمبر کے واقعات میں مارے گئے لوگوں کے اہل خانہ سعودی عرب کے خلاف شکایت کر کے اس سے معاوضے کا مطالبہ کر سکیں گے۔

امریکی کانگریس میں یہ قانون ایک ایسے وقت دوبارہ بھاری اکثریت منظور ہوا ہے جب اس سے پہلے صدر اوباما نے اس کو ویٹو کر دیا تھا۔

اوباما نے کانگریس کی جانب سے اپنے ویٹو کو کالعدم قرار دیئے جانے کے بعد کانگریس پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ کانگریس نے صدر کے ویٹو کو کالعدم قرار دے کر ایک خطرناک راستہ اپنایا ہے۔

کہا جاتا ہے کہ گیارہ ستمبر دو ہزار ایک  کے نیویارک اور واشنگٹن میں ہونے والے دہشت گردانہ حملوں میں پندرہ سعودی شہری ملوث تھے۔ ثبوت و شواہد کے مطابق ان سعودی  باشندوں کے سعودی عرب کے اعلی حکام سے رابطے تھے۔

اس سے پہلے سعودی عرب نے دھمکی دی تھی کہ اگریہ قانون کانگریس میں پاس ہوا تو وہ امریکہ میں موجود سات سو پچاس ارب ڈالرکا اپنا سرمایہ باہر نکال لے گا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس قانون کی منظوری کے بعد سعودی حکام کی مشکلات میں اضافہ ہو سکتا ہے اور دونوں ملکوں کے تعلقات اور تعاون کی سطح بھی کم ہو سکتی ہے۔/۹۸۹/ف۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬