09 December 2016 - 22:38
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 424959
فونت
مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن:
مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل اور سیکرٹری سیاسیات کراچی نے وحدت ہاؤس کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ ربیع الاول کا مقدس مہینہ آقائے دو جہاں رحمت للعالمین ﷺ کی ذات گرامی سے متعلق ہے۔
مجلس وحدت مسلمین پاکستان

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل حجت الاسلام علی انور جعفری اور سیکرٹری سیاسیات کراچی میر تقی ظفر نے وحدت ہاؤس کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ ربیع الاول کا مقدس مہینہ آقائے دو جہاں رحمت للعالمین ﷺ کی ذات گرامی سے متعلق ہے، اس مبارک مہینہ میں عاشقان رسول ﷺ پیغمبر رحمت سے اپنے عشق و مودت کا اظہار کرتے ہیں،

اسی مناسبت سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان صوبہ سندھ نے 25 دسمبر کو حیدر آباد میں تاریخی لبیک یارسول اللہ ﷺ کانفرنس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے، یہ کانفرنس اتحاد بین المسلمین کا عملی مظاہرہ ہوگی، جس میں تمام مکاتب اور مسالک کے لوگ شریک ہوکر امن و اتحاد کا عملی درس دیں گے۔

مجلس وحدت مسلمین کے کارکن حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری کی ہدایت پر ملک بھر میں عید میلاد النبی ﷺ کے جلوسوں پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کریں گے اور اس پرمسرت موقع پر سبیلیں لگائیں گے، بارہ سے سترہ ربیع الاول تک ہفتہ وحدت منائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں عید میلاد النبی ﷺ کے موقع پر سیدالانبیاء ﷺ کی سیرت طیبہ اپنانے اور نبی مہربان کے نقش قدم پر چلنے کا عہد کرنا ہوگا، ہمیں یہ بات بھی سمجھنا ہوگی کہ اسلام دشمن سامراجی قوتیں، مسلمانوں کو آپس میں دست و گریبان دیکھنا چاہتی ہیں، جبکہ تکفیری دہشت گرد، سامراجی قوتوں کے آلہ کار بن کر بے گناہ مسلمانوں کا ناحق خون بہا رہے ہیں، طالبان اور داعشی دہشت گردوں کی تشکیل اور سرپرستی شیطان بزرگ امریکہ کے ہاتھوں ہوئی ہے، اب یہ بات راز نہیں رہی ہے۔

حجت الاسلام علی انور جعفری کا کہنا تھا کہ گذشتہ کئی دہائیوں سے وطن عزیز پاکستان دہشت گردی کی آگ میں جل رہا ہے، دہشت گردوں کے ہاتھوں اب تک اسی ہزار پاکستانی شہری شہید ہوچکے ہیں، مجلس وحدت مسلمین نے دہشت گردی کے خلاف جدوجہد میں قائدانہ کردار ادا کیا ہے، ملک گیر دھرنوں سے لے کر وارثان شہدائے شکار پور کے ہمراہ تاریخی لانگ مارچ ملک دشمن دہشت گردوں کے خلاف پرامن جدوجہد کی اعلٰی مثالیں ہیں، اسی جدوجہد کے تسلسل میں 22 دسمبر کو حیدرآباد میں آل پارٹیز امن کانفرنس منعقد کی جا رہی ہے۔

ہم ملک کی تمام امن پسند قوتوں کو دعوت دیتے ہیں کہ آیئے دہشت گردی کے خاتمہ کے لئے ہمارا ساتھ دیجئے، ہم آخر میں ایک مرتبہ پھر سندھ حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ انہوں نے سانحہ شکار پور اور جیکب آباد کے وارثان شہداء سے جو معاہدہ کیا ہے، اس پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ سندھ اسمبلی کو بل پاس کرنے سے قبل اس بل کے متعلق مشاورت کرنی چاہئے تھی، خصوصاً دین سے متعلق امور میں، جلد بازی سے پاس کئے گئے بل پر علماء کرام اور دینی جماعتوں کے تحفظات دور کئے جائیں، جبکہ ایم ڈبلیو ایم اقلیتوں کے حقوق کی حمایت کرتی ہے، ان کے خلاف امتیازی سلوک اور جبر کا استعمال بھی قابل مذمت ہے، بل سے متعلق ہم سب کو مل بیٹھنا چاہئے، ڈائیلاگ اور گفتگو کے ذریعے خدشات کو دور کیا جاسکتا ہے، سندھ اسمبلی کا بل کوئی وحی منزل نہیں، جس میں تبدیلی نہ کی جاسکے۔/۹۸۸/ن۹۴۰/

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬