23 July 2016 - 07:06
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 422536
فونت
مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے اعلان پر؛
پاکستان میں دہشت گردی اور ٹارگٹ کلنگ کے خلاف ملک گیر احتجاج اور علامتی دھرنوں کا سلسلہ جاری رہا کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔
مجلس وحدت مسلمین پاکستان


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان نے دہشت گردی اور شیعہ مسلمانوں کی ٹارگٹ کلنگ کے خلاف احتجاج کے دوسرے مرحلے میں بائیس جولائی سے ملک بھر کی اہم شاہراہوں اور مقامات پر دھرنے کا اعلان کیا تھا جس میں لاہور، پشاور، کوئٹہ اور گلگت بلتستان سمیت ملک بھر میں جمعہ کی شام پانچ بجے سے دھرنے شروع ہوگئے تھے ۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق کراچی میں نمائش چورنگی، شاہرائے پاکستان انچولی، ملیر پندرہ اور اسٹیل ٹاؤن موڑ پر دھرنا جاری رہا ۔

دوسری طرف اسی شہر کے اسٹیل ٹاؤن موڑ پر دھرنا دینے والوں پر پولیس نے لاٹھی چارج کیا ہے جس کے نتیجے میں درجنوں افراد زخمی ہوئے ہیں۔ ایم ڈبلیو ایم کے ترجمان نے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے کہا : احتجاج ہمارا قانونی حق ہے اور مظاہرین پر پولیس گردی کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا۔

ادھر مسلم لیگ ق کے رہنما چودھری شجاعت حسین نے اسلام آباد میں ایم ڈبلیو اہم کے بھوک ہڑتالی کیمپ میں حجت الاسلام راجہ ناصر عباس جعفری سے ملاقات اور اپنی جماعت کی جانب سے حمایت کا یقین دلایا ہے۔

چودھری شجاعت حسین نے اس ملاقات میں کہا : ہم ایم ڈبلیو ایم کی بھوک ہڑتال اور دھرنے کے مقاصد کی حمایت کرتے ہیں اور حجت الاسلام راجہ ناصر عباس کے ساتھ کھڑے ہیں۔

قابل ذکر ہے پاکستان میں دہشت گردی اور شیعہ مسلمانوں کی ٹارگٹ کلنگ کے خلاف حجت الاسلام راجہ ناصر عباس اور ساتھیوں کی بھوک ہڑتال کو ڈھائی مہینے سے زیادہ ہوگئے ہیں۔ایم ڈبلیو ایم کا مطالبہ ہے کہ پاکستان میں دہشت گردی کے واقعات اور شیعہ مسلمانوں کی ٹارگٹ کلنگ کی تحقیقات کرائی جائیں اور ان میں ملوث عناصر کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬