26 October 2017 - 22:54
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 430547
فونت
ڈاکٹر محمد طاہر القادری :
پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ نے کہا : چہرے بدلنے سے کچھ نہیں بدلے گا کرپٹ اشرافیہ، جھوٹوں لٹیروں کو جنم دینے والے نظام کو بدلنا ہوگا۔
ڈاکٹر طاہر القادری

 :

ظالموں کی بجائے مظلوموں کی بات سنی جائے

پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ نے کہا : چہرے بدلنے سے کچھ نہیں بدلے گا کرپٹ اشرافیہ، جھوٹوں لٹیروں کو جنم دینے والے نظام کو بدلنا ہوگا۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا ہے کہ نااہل شریف پارٹی صدر بننے کے لیے ہزاروں کلو میٹرز کا سفر طے کرکے ہنگامی طور پر پاکستان پہنچ سکتے ہیں تو کرپشن کیسز کا سامنا کرنے کے لیے عدالت میں پیش ہونے لیے کے کیوں نہیں آسکتے؟، ایک ہی قانون کا اطلاق ایک جیسے کیسز پر مختلف صوبوں میں مختلف افراد پر مختلف کیوں ہے؟۔

عوامی تحریک کی مشاورتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا کہ کرپٹ اشرافیہ کیسز پر فیصلے رکوانا چاہتی ہے اور مختلف منصوبوں پر غور ہو رہا ہے، ایک منصوبہ بندی کے تحت این آر او کی خبریں پھیلائی جا رہی ہیں، خدانخواستہ کرپٹ عناصر، قاتلوں اور جھوٹوں کے لیے کوئی لانڈری سکیم آئی تو یہ پاکستان کے ساتھ بہت بڑی زیادتی ہوگی، دیکھتے ہیں ملک لوٹنے، فوج اور عدلیہ کے خلاف اعلان جنگ کرنیوالوں کو کون بچانے آتا ہے؟۔

طاہر القادری کا کہنا تھا کہ جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ پبلک کرنے کے حوالے سے حکومتی تاخیری ہتھکنڈوں پر تشویش ہے، شہدائے ماڈل ٹاؤن کے ورثاء نے فوری انصاف کے لیے عدالت عالیہ کے دروازے پر دستک دی تھی، مگر یہاں حکومتی وکلاء جن کے منہ قومی خزانے کے موتیوں سے بھرے ہوئے ہیں وہ دلائل کے نام پر تاخیری ہتھکنڈے استعمال کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا : انہی ہتھکنڈوں نے ساڑھے تین سال سے انصاف کا راستہ روک رکھا ہے، عدالت سے شہداء کے ورثاء کی استدعاء ہے کہ ان کے ساتھ انصاف کیا جائے، ظالموں کی بجائے مظلوموں کی بات سنی جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ چہرے بدلنے سے کچھ نہیں بدلے گا کرپٹ اشرافیہ، جھوٹوں لٹیروں کو جنم دینے والے نظام کو بدلنا ہوگا۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬