11 January 2014 - 18:02
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 6314
فونت
کوئٹہ کے امام جمعہ:
رسا نیوز ایجنسی – شھر کوئٹہ پاکستان کے امام جمعہ نے تاکید کی: کوئٹہ کے شیعہ عید میلادالنبی (ص) کے جلوس اہلسنت کیساتھ برابر سے شریک ہوں گے ۔
حجت الاسلام سيد ہاشم موسوي

 

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ کے مرکزی رہنما حجت الاسلام سید ہاشم موسوی نے اس ھفتہ نماز جمعہ کے خطبوں میں سیکڑوں مومنین کی شرکت میں منعقد ہوا کہا: کراچی میں اسلم چوہدری کی شہادت کے بعد حکومت کو دہشتگردوں کیخلاف فیصلہ کن کارروائی کرنی چاہئے تاکہ مزید نقصانات سے بچا جاسکے ۔


انہوں نے یہ کہتے ہوئے کہ شہدائے علمدار روڈ نے اپنے لہو سے اس ملت کو بیداری دی اور ہمیں مشکلات سے نجات دلائی کہا: کوئٹہ کی سرزمین شہیدوں کی سرزمین ہے اور اپنے شہیدوں کی یاد کو قائم رکھ کر ہی ہم کامیاب ہوسکیں گے۔


حجت الاسلام موسوی نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ پاکستان میں شہداء کے لواحقین نے دہشتگردوں کیساتھ مذاکرات کے آپشن کو رد کردیا لہذا موجودہ حکومت ملکی سطح پر دہشتگردوں کیخلاف فیصلہ کن کارروائی کرکے شہداء کے خون سے وفاداری کا ثبوت دے کہا: سانحہ یوم القدس کے موقع پر ہم پر جو بے بنیاد الزامات لگائے گئے تھے، بلوچستان ہائیکورٹ نے ان تمام الزامات کو بے بنیاد قرار دے دیا ہے۔ جسکے بعد یوم القدس کی ریلی میں شریک شہداء، علماء اور زخمیوں پر لگائے گئے جھوٹے الزامات غلط ہوگئے۔ کیس کا فیصلہ ہونے کے بعد ہی حکومت نے شہیدوں کے لواحقین کیلئے مختص کی گئی امدادی رقم کو جاری کیا، جسے ہم نے اپنا فریضہ سمجھ کر خانوادہ شہداء کی خدمت میں پیش کردیا ہے۔


ایم ڈبلیو ایم کوئٹہ پاکستان کے مرکزی رہنما نے خطبہ جمعہ میں یہ کہتے ہوئے کہ ملک دشمن تکفیری دہشتگرد ٹولے کے عزائم کو خاک میں ملانے اور پاکستان میں اتحاد بین المسلمین کے فروغ کیلئے کوئٹہ میں عید میلاد النبی (ص) کے موقع پر اہل تشیع برادران اپنے اہلسنت بھائیوں کے ہمراہ جشنِ میلاد کے جلوس میں شرکت کرینگے کہا: کراچی میں اسلم چوہدری جیسے فرض شناس افسر کے قتل سے پاکستانی پولیس کو نقصان پہنچا ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ وہ دہشتگردوں کیخلاف بہادری سے مقابلے کرنے والے افسروں کے تحفظ کا انتظام کرے اور یہ تب ہوسکتا ہے جب ملکی سطح پر دہشتگردوں کیخلاف فیصلہ کن کارروائی عمل میں لائی جائے۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬