19 February 2018 - 22:29
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 435091
فونت
محسن رضائی:
تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکریٹری نے غاصب صیہونی حکومت کے وزیراعظم بنیامین نتن یاہو کی دھمکی پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل نے اگر ایران کے خلاف حماقت کا مظاہرہ کرتے ہوئے کوئی معمولی سی بھی غلطی کی تو اسے کھنڈرات میں تبدیل کر دیا جائے گا۔
محسن رضائی

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، غاصب صیہونی حکومت کے وزیراعظم بنیامین نتن یاہو نے اتوار کے روز میونخ سیکورٹی کانفرنس میں ڈا‏ئس کے نیچے سے لوہے کا ایک ٹکڑا اٹھا کر اسے بلند کرتے ہوئے دعوی کیا کہ یہ ایران کے اس ڈرون طیارے کا ٹکڑا ہے جو دس فروری کو اسرائیل کی فضائی حدود میں داخل ہوا تھا۔غاصب صیہونی حکومت کے وزیراعظم نے ایران کے خلاف اپنے بے بنیاد دعؤوں کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ شام میں ایران کی فوجی موجودگی کو روکنے کی کوشش کی جائے گی۔

غاصب صیہونی حکومت کے وزیراعظم بنیامین نتن یاہو کے بیان پر لبنان کے المنار ٹی وی سے گفتگو میں اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکریٹری محسن رضائی نے کہا کہ اقوام متحدہ اور میونخ سیکورٹی کانفرنس میں غاصب صیہونی حکومت کے وزیراعظم  نتن یاہو کی ڈرامے بازی بچوں کے کھیل کی برابر بھی اہمیت نہیں رکھتی۔

انھوں نے کہا کہ امریکی اور صیہونی حکام ایران کو نہیں پہچانتے اور وہ مزاحمت کی طاقت کو نہیں سمجھتے یہی وجہ ہے کہ وہ  ہر بار شکست کھاتے ہیںتشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکریٹری محسن رضائی نے شام کے اینٹی ایرکرافٹ سسٹم کے ہاتھوں غاصب صیہونی حکومت کے ایف سولہ جنگی طیارے کی، ہونے والی تباہی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقدام اس بات کو ثابت کرتا ہے کہ شامی فوج اپنے پیروں پر کھڑی ہوئی ہے اور مزاحمت کی پیشرفت جاری ہے اور غاصب صیہونی حکومت کمزور   اور پسپائی اختیار کرنے پر مجبور ہو گئی ہے۔

تشخیص مصلحت نظام کونسل کے سیکریٹری نے امریکی سفارت خانہ تل ابیب سے بیت المقدس منتقل کرنے کے بارے میں واشنگٹن کے دشمنانہ منصوبے کے بارے میں بھی کہا کہ امریکہ کے اس منصوبے سے فلسطین کی مزاحمتی قوتوں میں آپسی قربت مزید بڑھی ہے اور ان میں اتحاد و یکجہتی بہت اچھی طرح سے وجود میں آئی ہے اور غاصب صیہونی حکومت ان مزاحمتی قوتوں کا کچھ نہیں بگاڑ سکتی۔

محسن رضائی نے ایران کے بارے میں سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر کے دعوے کے جواب میں بھی کہا کہ سعودی عرب کے وزیر خارجہ اپنے ملک کی اندرونی صورت حال کو دیکھیں اور اسے سنبھالیں اور بحرین، یمن اور قطر میں خود کے پیدا کردہ مسائل کو حل کریں۔

واضح رہے کہ سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیرنے اتوار کے روز میونخ سیکورٹی کانفرنس میں اپنے ایک بیان میں بے بنیاد دعوی کیا ہے کہ ایران شام، یمن اور لبنان میں عدم استحکام پیداہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے اور ایران کی موجودہ پالیسیاں تبدیل ہونی چاہئیں - /۹۸۸/ ن۹۴۰

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬