09 March 2018 - 21:22
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 435297
فونت
عبدالملک بدرالدین الحوثی :
یمن کی عوامی انقلابی تحریک انصار اللہ کے سربراہ نے کہا ہے کہ دشمنان اسلام نے مسلمانوں کے خلاف شدید نفسیاتی جنگ شروع کر رکھی ہے اور وہ اسلامی سماجی اصول اور اخلاقی قدروں کو ثقافتی حملوں کا نشانہ بنا رہے ہیں۔
 سید عبدالملک بدرالدین الحوثی

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، دختر رسول جناب فاطمہ زہرا سلام اللہ علیھا کے یوم ولادت کے موقع پر اپنے تہنیتی پیغام میں انصار اللہ کے سربراہ عبدالملک بدرالدین الحوثی کا کہنا تھا کہ اس مبارک دن کو عالمی یوم خواتین قرار دیا جانا چاہیے۔

انصار اللہ کے سربراہ کے پیغام میں دشمنوں کی جانب سے اسلامی تہذیب و ثقافت پر شب خون مارے جانے کی کوششوں کے تدارک کے لے ٹھوس اور موثر اقدامات کو ضروری قرار دیتے ہوئے کہا گیا کہ ثقافتی جنگ، فوجی حملے سے کہیں زیادہ خطرناک ہے۔

عبدالملک بدارالدین الحوثی نے انسانیت کے دشمنوں اور ان کے سرخیل امریکہ اور اسرائیل کی اندھی پیروی کے بارے میں خـبردار کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ اور اسرائیل ناجائز سیاسی مفادات کے حصول کی خاطر عورت کی منزلت کو گرا کر اسے ایک نمائشی شے میں تبدیل کرنا چاہتے ہیں۔

انصاراللہ کے سیکریٹری جنرل نے اسلامی دنیا اور خاص طور سے مسلمان خواتین سے اپیل کی کہ وہ دشمنوں کے حیلوں اور چالوں سے پوری طرح ہوشیار رہیں۔

عبدالملک بدرالدین الحوثی نے سعودی حکومت کی جارحیت کے نتیجے میں پیدا ہونے والے سخت اور دشوار حالات میں یمنی خواتین کے صبر و استقامت اور ایثار و قربانی کے جذبے کو زبردست الفاظ میں سراہا۔

درایں اثنا اطلاعات ہیں کہ سعودی حکومت کے جنگی طیاروں نے شمالی یمن کے شہر باقم کے رہائشی علاقوں پر بمباری کی ہے جس میں کم سے آٹھ بے گناہ شہری شہید اور چودہ دیگر زخمی ہوئے ہیں۔

یمنی فوج نے سعودی جارحیت کے جواب میں جنوبی سعودی عرب کے صوبے جیزان میں گھات لگا کر متعدد سعودی فوجیوں کو ہلاک کر دیا۔

یمنی فوج کے اسنائپروں کی فائرنگ میں متعدد سعودی فوجی زخمی بھی ہوئے ہیں جبکہ سعودی فوج کی متعدد گاڑیوں کو بھی تباہ کر دیا گیا۔ یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس کے جوانوں نے وسطی صوبے البیضا میں بھی سعودی اتحاد کے ٹھکانوں پر حملے کیے ہیں۔ /۹۸۸/ ن۹۷۶

 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬