10 January 2017 - 14:30
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 425602
فونت
راحیل شریف کا سعودی حکام پر دباو؛
نجی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے پاک فوج کے ریٹائرڈ جنرل نے دعویٰ کیا ہے کہ راحیل شریف نے فوجی اتحاد کی سربراہی سنبھالنے کیلئے تین شرائط سعودی عرب کے سامنے رکھی تھیں، جن میں سے پہلی شرط ایران کو اس اتحاد میں شامل رکھنا تھا۔
راحیل شریف


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، پاک فوج سے ریٹائرڈ جنرل امجد شعیب کا کہنا ہے کہ سعودی حکام نے وزیراعظم نواز شریف سے بات کی تھی کہ جنرل راحیل شریف کو اسلامی فوجی اتحاد کا سربراہ بنایا جائے، جس کی انہوں نے اجازت دی تھی۔ نجی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ راحیل شریف نے اسلامی فوجی اتحاد کا سربراہ بننے کیلئے سعودی عرب کے سامنے 3 شرائط رکھی تھیں۔

پہلی شرط، ایران کو فوجی اتحاد میں شامل کیا جائے، چاہے وہ مبصر کی حیثیت سے ہی کیوں نہ ہو۔ دوسری شرط یہ تھی کہ راحیل شریف کسی کی کمان میں کام نہیں کریں گے، ایسا نہ ہو کہ اصل سربراہی کسی سعودی کمانڈر کے پاس ہو اور انہیں اس کے نیچے کام کرنا پڑے۔ تیسری شرط یہ تھی کہ انہیں مسلم ممالک میں ہم آہنگی پیدا کرنے کیلئے صلح کار کے طور پر کام کرنے کی اجازت ہونی چاہیئے، تاکہ بوقت ضرورت وہ مسلم دنیا میں اپنا کردار ادا کر سکیں۔ ان کا کہنا تھا کہ راحیل شریف سے رابطہ ہوا اور یہ سب کچھ راحیل شریف نے ہی انہیں بتایا۔ /۹۸۹/ ف۹۴۰

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬