24 July 2020 - 13:20
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 443259
فونت
ایران کے مسافر بردار طیارے جو لبنان کی طرف جا رہی تھی  شام کے فضائی حدود میں دو جنگی طیاروں کی فضائی مداخلت کا سامنا کرنا پڑا۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے مسافر بردار طیارے جو لبنان کی طرف جا رہی تھی  شام کے فضائی حدود میں دو جنگی طیاروں کی فضائی مداخلت کا سامنا کرنا پڑا۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق ایران کے مسافر بردار طیارے ماہان ائیر کو کل رات شام کے فضائی حدود میں دو جنگی طیاروں کی مداخلت کا سامنا کرنا پڑا۔

ان لڑاکا طیاروں کی اس خطرناک کارروائی کے بعد، ایرانی مسافر بردار طیارے کے پائلٹ نے ان دونوں لڑاکا طیاروں سے ٹکراؤ سے بچنے کے لئے فلائٹ کی اونچائی کو تیزی سے کم کیا جس کی وجہ سے اس طیارے کے متعدد مسافر زخمی ہوگئے۔

مذکورہ لڑاکا طیارے ایران کے مسافر بردار طیارے کے تقریبا 100 میٹر کی دوری تک پہنچ گئے تھے۔

ہر چند کہ تا حال دونوں لڑاکا طیاروں کی شناخت سامنے نہیں آئی ہے تاہم کچھ ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ لڑاکا طیارے امریکی اور کچھ ذرائع کا کہنا ہے کہ اسرائیلی تھے۔

ایران کے مسافر بردار طیارے کے پائلٹ کا کہنا ہے کہ جن 2 لڑاکا طیاروں نے ہمیں دھمکی دی تھی وہ امریکی تھے جبکہ ہمارے نمائندے جو خود اس جہازمیں سوار تھے اس کا کہنا ہے کہ لڑاکا طیارے اسرائیلی تھے۔

واضح رہے کہ ایران کا مسافر بردار طیارہ ملنے والی دھمکیوں کے باوجود بیروت ہوائی اڈے پر بہ حفاظت اتر گیا۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬
تازه ترین خبریں
مقبول خبریں
پسندیده خبریں