19 April 2016 - 18:27
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 9285
فونت
حسین جابری انصاری :
رسا نیوز ایجنسی ـ اسلامی جمہوریہ ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے شام کے مقبوضہ علاقے جولان میں صیہونی حکومت کی کابینہ کے اجلاس کی مذمت کی ہے اور کہا ہے یہ علاقہ شام سے متعلق ہے ۔
حسين جابري انصاري


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق حسین جابری انصاری نے جولان کے مقبوضہ علاقے میں پہلی بار تشکیل پانے والے صیہونی حکومت کی کابینہ کے اجلاس کے انعقاد کے اقدام  اور اس علاقے سے متعلق بے بنیاد اور غیر منطقی دعووں کی تکرار کی مذمت کرتے ہوئے کہا : جولان ایک ایسا مقبوضہ علاقہ ہے جس کا تعلق شام سے ہے اور جلدی یا بدیر اس پر سے قبضہ ختم ہوگا اور شام کو واپس مل جائے گا ۔


انہوں نے صیہونی حکومت کے اس اقدام کو بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قرار دیا اور صیہونی حکومت کے توسیع پسندانہ اور اشتعال انگیز اقدامات کے مقابلے میں عالمی برادری سے ٹھوس قدم اٹھائے جانے کا مطالبہ کیا ۔


قابل ذکر ہے غاصب صیہونی حکومت کے وزیراعظم بنیامین نتن یاہو نے اتوار کے روز جولان کے علاقے میں پہلی بار تشکیل پانے والی اپنی کابینہ کے اجلاس میں اس علاقے پر اسرائیل کی مالکیت پر تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اس علاقے سے پسپائی کے لئے عالمی دباؤ کے مقابلے میں نہیں جھکیں گے۔


انہوں نے شام کے مقبوضہ علاقے جولان کے بارے میں اپنے اشتعال انگیز بیان میں عالمی برادری سے اس علاقے پر اسرائیل کی مالکیت تسلیم کئے جانے کی اپیل بھی کی ۔


واضح رہے کہ اسرائیل نے سن انّیس سو سڑسٹھ میں عربوں کے ساتھ ہونے والی جنگ میں شام کے علاقے جولان کی بعض پہاڑیوں پر غاصبانہ قبضہ کر لیا تھا اور انّیس سو اکیاسی میں اس نے اس علاقے کو تمام مقبوضہ علاقوں میں شامل کرنے کا اعلان کر دیا تھا ۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬