30 December 2019 - 15:28
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 441842
فونت
اسد الدین اویسی:
اسد الدین اویسی نے کہا ہےکہ مرکز کی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) زیر قیادت نریندر مودی حکومت این آر سی اور شہریت ترمیمی قانون ( سی اے اے ) کو نافذ کر کے ہندو اور مسلمانوں کے مابین پھوٹ ڈالنا چاہتی ہے ۔ جس کو کبھی کامیاب نہیں ہونے دیاجائے گا۔

رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین ( اے آئی ایم آئی ایم ) کے صدر اسد الدین اویسی نے ایک اجلاس کو خطاب کرتے ہوئے کہاکہ این آرسی اور سی اے اے جیسے کالے قانون کولیکر ان کی لڑائی مرکز کی مودی حکومت سے ہے ۔ حکومت قانون نافذ کر کے ہندواور مسلم کے مابین تفریق کرنا چاہتی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ مودی حکومت کی منشا کو وہ کبھی پورانہیں ہونے دیں گے ۔

اے آئی ایم آئی ایم کے صدر نے کہاکہ مسلمانوں نے آزادی کی لرائی میں قربانیاں دی تھیں۔ انہوں نے الزام عائد کیاکہ وزیراعظم نریندر مودی ملک کے مسلمانوں سے نفرت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اس قانون کے تحت بنگلہ زبان بولنے والے 500,000 لوگوں کو ڈینٹیشن کیمپوں میں رکھا گیاہے۔

دوسری جانب سماج وادی پارٹی(ایس پی) کے سربراہ و سابق وزیراعلی اکھلیش یادو نے این پی آر/این آرسی کو غریب و اقلیت مخالف قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہم سب اسی ملک کے شہری ہیں میں اپنا کوئی بھی دستاویز نہیں دکھاؤنگا۔

اکھلیش یادو نے کہا کہ گاؤں میں لوگوں کے پاس دستاویز نہیں ہیں وہ کیسے ثابت کریں گے کہ وہ اسی ملک کے رہنے والے ہیں۔

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬
تازه ترین خبریں
مقبول خبریں
پرطرفدارترین