04 March 2010 - 23:12
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 1039
فونت
آيت‌الله مکارم شيرازي:
رسا نيوزايجنسي حضرت آيت‌الله مکارم شيرازي نے يہ بيان کرتے ہوئے کہ ايران کي حکومت نے سامراجيت کي نيند اڑا دي ہے کہا : امريکن صدر جمھوريہ کوروزوشب ايران کي فکر کھائے جارہي ہے اور يہ اس بات پر دليل ہے کہ ھم اھميت کے حامل ہيں
آيت‌الله مکارم شيرازي

 

رسا نيوزايجنسي کے رپورٹر کي رپورٹ کے مطابق ، شھر قم کے مراجع تقليد ميں سےحضرت آيت‌الله ناصر مکارم شيرازي نے اج صبح بيروني ممالک ميں ايران کے ثقافتي کاونسلرس سے ملاقات ميں نهج البلاغه  امام علي (ع) کے خطبہ کے ايک حصے کو پڑھتے ہوئے اسلام سے پہلے اوربعثت مرسل اعظم کے بعد امت اسلاميہ کے حالات کو مورد گفتگو قرار ديکر کہا : مرسل اعظم کي بعثت سے پہلے عوام ثقافتي ، مادي ومعنوي پس ماندگي سے دوچار تھي مگر اپ کي بعثت نے انہيں ظلم وجور اور جھالت وپسماندگي سے نجات دلائي اور مسلمانوں کے اقتدار کا سبب بني .


انہوں نے کہا : اگر کسي کو مرسل اعظم (ص) کے معجزات کو ديکھنا ہے تو اپ  کي بعثت سے پہلے اور بعثت کي بعد کے حالات پر غور کرنا چاھئے کہ يہ تبديلي معمولي راستوں سے ممکن نہي ہے .

 

انہوں نے بين الاقوامي سطح پر انقلاب اسلامي کي ابھت کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا : ايران کي حکومت نے سامراجيت کي نيند اڑا دي ہے امريکن صدر جمھوريہ کوروزوشب ايران کي فکر کھائے جارہي ہے اور يہ اس بات پر دليل ہے کہ ھم اھميت کے حامل ہيں.

 

قرآن کريم اس مفسر نے کہا : وھابيوں نے اپنے تعصب اور افراطيت کي بنياد پر دھشت گردي کواسلام  سے منسوب کرديا ہے اوريہ بہت بڑي خيانت ہے .  


تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬