28 October 2010 - 14:10
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2012
فونت
قائد انقلاب اسلامي:
رسا نيوزايجنسي - قائد انقلاب اسلامي نے ديني علوم کے مرکز کي ايک اہم ضرورت اسٹريٹيجک پروگرام اور منصوبہ تيار کرنا بيان کيا ?
قائد انقلاب اسلامي

رسا نيوزايجنسي کي رھبر معظم کي خبر رساں سائٹ سے منقولہ رپورٹ کے مطابق ، قائد انقلاب اسلامي آيت اللہ العظمي سيد علي خامنہ اي نے منگل کي شب قم کے ديني علوم کے مرکز کي اعلي کونسل کے ارکان سے ملاقات ميں مرکز کے لئے جامع تعليمي، تحقيقي اور تبليغي نظام کي تدوين کو ضروري قرار ديا اور فرمايا : ديني علوم کے مرکز کي ايک اہم ضرورت اسٹريٹيجک پروگرام اور منصوبہ تيار کرنا ہے?

قائد انقلاب اسلامي کے مطابق ديني علوم کے سلسلے ميں منصوبہ بندي، اہداف کا تعين اور ترجيحات کي نشاندہي، مستقبل کے لئے جامع منصوبہ کے تحت ہي ممکن ہے اور ديني علوم کے مرکز کا دفتري اور انتطامي شعبہ بھي بہت چابکدست اور مستعد ہونا چاہئے?

قائد انقلاب اسلامي نے قم کے ديني علوم کے مرکز کي اعلي کونسل کو مراجع تقليد سے مسلسل رابطہ رکھنے کي سفارش کي اور مرکز کے صاحب استعداد نوجوانوں کي تجاويز سے بھرپور استفادہ کرنے کي ضرورت پر زور ديا?

قائد انقلاب اسلامي نے فرمايا : قم کے ديني علوم کے مرکز کي اعلي کونسل کے فيصلوں ميں قائد انقلاب اسلامي کي جانب سے کوئي مداخلت نہيں ہوگي?

قائد انقلاب اسلامي نے ديني علوم کے مرکز ميں تحصيل علم اور تدريس کي روش کو محدود نہ رکھنے کي ضرورت پر زور ديا اور "عرفان عملي" کو طلبہ اور علمائے کرام کے لئے ضروري قرار ديا اور فرمايا : طلبہ کے لئے علم اخلاق کے بزرگان کي سوانح حيات کا بيان اور ان کے درس اخلاق اور نصيحتوں پر مبني خطوط کي اشاعت "عرفان فکري" سے بھي زيادہ موثر ہے?

قائد انقلاب اسلامي نے حاليہ برسوں ميں اور اسي طرح طلبا کے ساتھ جمعرات کي ملاقات ميں زير بحث آنے والے ديني علوم کے مرکز ميں تبديلي کے موضوع کے بارے ميں فرمايا : ديني علوم کے مرکز ميں تغير و تبدل کے موضوع پر پوري سنجيدگي کے ساتھ کام کيا جانا چاہئےـ آپ نے ديني علوم کے مرکز کي اعلي کونسل اور قيادت کي زحمتوں کي قدرداني بھي کي?

اس نشست کے آغاز ميں قم کے ديني علوم کے مرکز کي اعلي کونسل کے سربراہ آيت اللہ يزدي نے اعلي کونسل کي نئي ساخت اور اس کي ذيلي کميٹيوں اور اسي طرح اعلي کونسل کي جانب سے کئے جانے والے فيصلوں کي رپورٹ پيش کي?

انہوں نے کہا : ملک بھر کے ديني مدارس کي علمي سطح کا جائزہ، ان کي درجہ بندي، مدارس کے ممتاز صلاحيتوں والے طلبہ کے لئے ايک مرکز کا قيام، ديني علوم کے مراکز ميں مالياتي اور سرکاري خدمات کا ہم آہنگ نظام قائم کرنا، محققين کي تائيد و مدد کے لئے ايک فنڈ کے منشور کي تدوين، قم کے ديني علوم کے مرکز کي اعلي کونسل کے اہم فيصلوں ميں شامل ہيں?

ديني علوم کے مراکز کے زعيم آيت اللہ مقتدائي نے بھي اپني رپورٹ ميں کہا : ذمہ داريوں کے مطابق ديني علوم کے مراکز کے ڈھانچے ميں تبديلي، بيس سالہ منصوبے کي تدوين، تبليغ کے لئے پاليسي ساز کونسل کي تشکيل اور اس کي پشتپناہي کرنے والے کميشن کا قيام، انفارميشن ٹکنالوجي کي مدد سے تعليمي امور کو سرعت بخشنا اور مربوط تعليمي اطلاعاتي نظام تيار کرنا، وہ اہم اقدامات ہيں جو اب تک انجام دئے گئے ہيں?

اجلاس ميں اعلي کونسل کے کچھ ديگر ارکان نے بھي ديني علوم کے مرکز ميں موجود صلاحيتوں کي حفاظت اور پرورش سے متعلق مناسب اقدامات اور مراجع تقليد کے نظريات سے استفادے کے سلسلے ميں اپني تجاويز پيش کيں?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬