05 January 2011 - 15:38
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2255
فونت
آيت الله مکارم شيرازي :
رسا نيوز ايجنسي ـ حضرت آيت الله مکارم شيرازي اس تاکيد کے ساتھ کہ تاريخي واقعات اور تاريخي مسائل کو بھلايا نہي جا سکتا ہے ، کہا : بعض اھل سنت کے علماء نے ايراني ٹيلي ويژن کے کچھ پروگرام کو پيامبر اکرم صلي اللہ عليہ و ا?لہ وسلم کے اصحاب کي اھانت بتايا ہے حالانکہ ان کي يہ فکر غلط ہے ?
آيت الله مکارم شيرازي

رسا نيوز ايجنسي کے رپورٹر کے رپورٹ کے مطابق حضرت آيت الله ناصر مکارم شيرازي مرجع تقليد نے ا?ج اپنے فقہ کے درس خارج ميں جو طلاب و علماء کي کثير شرکت کے ساتھ اسلامي جمہوريہ ايران کے شہر مقدس قم کے مسجد اعظم ميں منعقد ہوا اس ميں اھل سنت کي طرف سے اسلامي جمہوريہ ايران کے ٹيلي ويژن کي کچھ پروگرام کے اعتراض کي طرف اشارہ کرتے ہوئے بيان کيا : بعض مصر کے علماء اور اس ملک کے جنوبي علاقہ کے اھل سنت بھائي نے ٹيلي ويژن کے ذريعہ بعض تاريخي پروگرام کے نشر کو پيامبر اکرم صلي اللہ عليہ و ا?لہ وسلم کے اصحاب کي اھانت بتايا ہے ?

مرجع تقليد نے بيان کيا : ان لوگوں کو غور کرني چاہيئے کہ اھانت ايک الگ مسئلہ ہے اور تاريخي روايت دوسرا مسئلہ ہے اور ان دونوں ميں بنيادي فرق ہے ?

حضرت آيت الله مکارم شيرازي نے وضاحت کي : کيا کسي کو شک ہے کہ تاريخ اسلامي ميں ايک جنگ ہوا ہے جس کا نام جنگ جمل ہے ؟ اور کيا کسي کو شک ہے کہ طلحہ و زبير نے اپنے امام کي بيعت توڑ دي ؟ کيا کسي کو اس پر شک ہے کہ مسلمانوں کي کثير تعداد اس جنگ ميں مارے گئے ؟ يہ سب تاريخي روايت ہے کہ اور اس کو بيان کرنے ميں کوئي مشکل نہي ہے ?

انہوں نے اس بحث کو جاري رکھتے ہوئے وضاحت کي : کيا کسي کو شک ہے کہ اسلام ميں ايک جنگ صفين کے نام سے ہوا ؟ کيا کسي کو اس ميں شک ہے کہ معاويہ نے اپنے زمانہ کے امام کي بيعت نہي کي ؟ اور ا?پ لوگ کہتے ہيں کہ تاريخ بيان نہ کيا جائے ?

حوزہ علميہ قم ميں فقہ کے درس خارج کے استاد نے تاکيد کي : کبھي تاريخ سے ا?نکھيں بند نہي کرني چا ہيئے اور تحقير ايک مسئلہ ہے اور تحقيق دوسرا مسئلہ اور کبھي بھي ان دو چيزوں کو مخلوط نہ کيا جائے ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬