13 February 2011 - 15:04
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2408
فونت
بحريني شيعہ رھنما :
رسا نيوزايجنسي - بحريني شيعہ رھنما نے يہ بيان کرتے ہوئے کہ عوامي قيام کي پروزي ميں رھبر کا وجود اھم اور شرط ہے کہا : ھر نئے انقلاب کو نئے خميني کي ضرورت ہے
آيت الله عيسي قاسم


رسا نيوزايجنسي کي رپورٹ کے مطابق ، بحرين کے شيعہ ديني رھنما ، آيت الله شيخ عيسي قاسم نے مسجد امام صادق (ع) ميں مومنين کے اجتماع سے خطاب ميں کہا : اج عربي ممالک ميں شديد زلزلے کے جھٹکے ، امنڈتا ہوا طوفان اوربدلتي ہوئي سياست اتفاقي اور ناگہاني نہي ہے بلکہ موجودہ صورت حال ، بڑھتے ہوئے ظلم ، انساني حقوق وکرامت کو زير پا قرار دينا ، قلع و قمع کيا جانا اورمعاشرے ميں برائيوں کا رواج کا تقاضا ہي يہي ہے ?

انہوں نے مزيد کہا : عربي ممالک کي عوام نے اپنے دلوں سے خوف وحشت نکال کر قيام کيا اور اپني موجودہ طرز حيات کي تبديلي کے لئے سڑکوں پر نکل ائي ?

آيت الله عيسي قاسم نے ايک قيام کي کاميابي ميں رھبريت کے کردار کو اھم بيان کيا اور کہا : ھرانقلاب کي پيروزي ميں رھبر کا کردار اھم رہا ہے جو ايران کي عوام تحريک ميں بغور ديکھنے کو ملي ، امام خميني (رہ) شاھنشاہي اور سامراجي نظام پر کامياب ہوئے اور ھر زمانے کے نئے انقلاب وقيام کو ايک نئے خميني کي ضرورت ہے ?

بحرين کے شيعہ ديني رھنما نے مصر وتيونس کے مشابہ ديگر عربي ممالک ميں حوادث پيش انے کي خبرديتے ہوئے کہا : تيونس اور مصر ميں عوامي کاميابي نے ديگر عربي ممالک کے باشندوں کي حوصلہ افزائي کي تاکہ وہ اپنے ملک کي اصلاح ميں بھي قدم اگے بڑھائيں دنيا ميں اج جوطوفان اٹھا ہے کسي ايک ملک تک محدود نہ رہ سکے گا بلکہ تيزي سے بڑھ کرديگر ممالک کي ديواروں سے ٹکرائے گا ?

انہوں نے حکام کو عوام مطالبات پر توجہ دينے کي سفارش کرتے ہوئے کہا : حکام عوامي انقلاب سے روبرو نہ ہونے سے بچنے کے لئے ضروري ہے کہ عوام کے مطالبات پر توجہ کريں اور ان کے حقوق ، ان کي کرامت وانسانيت کا خاص خيا ل رکھيں ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬