09 May 2011 - 17:20
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2750
فونت
مصري عوام کے درميان مسلسل خون خرابہ کي بنا پر ؛
رسا نيوز ايجنسي ـ مصر کے مفتي نے اس ملک کي عوام سے سلامتي و سکون کي اپيل کرتے ہوئے ا?پسي تنازعہ و اختلاف سے پرھيز کرنے کي تاکيد کي ہے ?
مصر کے مفتي نے اس ملک کے باشندوں کو سلامتي و سکون کي طرف دعوت دي ہے

رسا نيوز ايجنسي کي رپورٹ کے مطابق مصر کے شہر قاھرہ ميں مسلمانوں اور عيسائيوں کے درميان تنازعہ جو گذشتہ شب پيش ا?يا ہے جس ميں 196 سے بھي زيادہ لوگوں کے ھلاکت و زخمي ہونے کي خبر ہے جس سلسلہ ميں اس ملک کے مفتي شيخ علي جمعہ نے اس تنازعہ کي شديد مذمت کرتے ہوئے مصر کي عوام کو سلامتي و سکون اور قانون کي پابندي کرنے کي دعوت دي ہے ?

انہوں نے اس سلسلہ ميں کہا ہے : وہ لوگ جنہوں نے اس تنازعہ کو شروع کيا ہے وہ دين سے بے خبر ہيں اور وہ اسلامي اور عيسائي دين کے کسي بھي تعليمات پر عمل نہي کر رہے ہيں ?

شيخ علي جمعه نے سکون و اطمينان کي ضرورت کي تاکيد کرتے ہوئے وضاحت کي : اس شہر کے تمام باشندوں سے اپيل ہے کہ سلامتي کي حفاظت کريں اور قانون پر عمل کريں تا کہ اس ملک کي نا امني خطرہ سے محفوظ رہا جائے ?

محمد البديع اخوان المسلمين مصر کے رہنما نے بھي اس حادثہ پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے تاکيد کي : اخوان المسلمين دہشت گردي کي شديد مذمت کرتا ہے اس طرح کے ظلم و جرائم کا اسلام ميں کوئي جگہ نہي ہے اور اسلام دہشت گردي سے نفرت کرتا ہے ?

انہوں نے کہا : اسلام نے ھم لوگوں سے عبادت کے جگہوں کے احترام کي تاکيد کي ہے اور اس مقدس مقام کي اھانت کي ممنوعيت چاہي ہے اور چرچ ہو يا مسجد کے احترام کو واجب قرار ديا ہے ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬