29 May 2011 - 19:03
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2832
فونت
سيھات عربستان کے امام جمعہ :
رسا نيوزايجنسي - سيھات عربستان کے امام جمعہ نے اسلامي شناخت کو مٹائے جانے کے سلسلے سے دنياے سامراجيت کي کوششوں سے ھوشيار کيا ?
حجت الاسلام شيخ عبدالجليل الزاکي



رسا نيوزايجنسي کي رپورٹ کے مطابق ، سيھات عربستان کے امام جمعہ حجت الاسلام شيخ عبدالجليل الزاکي نے ايک مقالہ ميں جو الراصد نٹ سائٹ عربستان سے منتشرکيا گيا 33 روزه جنگ ميں حزب اللہ کي اسرائيل پر پيروزي کو مورد گفتگو قرار ديا ?

اس مقالہ ميں ايا ہے : 33 روزه جنگ ميں حزب اللہ کي اسرائيل پر پيروزي اج ھم جس پيروزي کي پانچويں سالگرد پہ جشن منارہے ہيں ، حق کي باطل پراور ايمان کي دنياے کفرپر پيروزي تھي يہ پيروزي فقط لبنان کي عوام ہي سے مخصوص نہي تھي بلکہ امت اسلاميہ کي دنيائے سامراجيت کے مقابل عظيم پيروزي محسوب کي جاتي ہے ، اسرائيل جو60 سال کےعرصے سے دنيا ميں فسادات کے پھيلانے ، عورتوں ، بچوں اورجوانوں کے قتل عام ميں مشغول ہے ھرگز تصور نہي کرسکتا تھا کہ ايک دن اس طرح کي حقارت اميز ہار سے روبرو ہوگا مگر خدا کا معيار دنياے کے معياروں سے کہيں بالاتر ہے ?

حجت الاسلام الزاکي نے يہ بيان کرتے ہوئے کہ اسلام دشمن عناصرامت اسلاميہ کو ديني اصولوں سے دور کرنے کوشش ميں مصروف ہے کہا : دنياے سامراجيت جسے امام خميني (رہ ) نے کينسر کا ٹومرکہا نے اسلام کے تمام اصول اخلاقيات ، ثقافت ، سياست اور افکار کو مورد حملہ قرار ديا ہے اور يهودي سازي ، فلسطين سے فلسطينيوں کے نکالے جانے اور بحرين ميں مساجدوں وامام بارگاہوں کي تباہي جيسے اقدامات کے ذريعہ اسلام کي بنيادوں کو متزلزل کرنے کا ارادہ رکھتي ہے تاکہ امت اسلاميہ کے درميان سے اسلامي شناخت کو مٹا سکے ?

سيہات عربستان کے امام جمعہ نے اسلام کي طاقت کو سامراجيت کے تصور کہيں بالاتر بيان کيا اور کہا : امريکا اور اسرائيل اسلام کي مسلمانوں عطا کردہ عزت وقدرت وايمان کے اگے سر تسليم خم کرنے پہ مجبورہوں گے اوران کے مقابل ذليل وخوار ہيں ، ايران وعراق ومصر وليبيا وترکي وديگر اسلامي ممالک عظيم مادي ومعنوي ثروت کے مالک ہيں اور اسي بنياد پر دنياے سامراجيت اسلامي معاشرے پر اپنا قبضہ جمانا چاھتا ہے ، اسلامي ممالک کي علمي توانائي بھي اج کسي پر پوشيدہ نہي ہے اسلامي جمھوريہ ايران جيسے ممالک اتنا زيادہ ترقي يافتہ ہوچکے ہيں کہ کينسر جيسي بيماريوں کا علاج کرسکتے ہيں ?

انہوں نے آمريکا و اسرائيل کے سلسلے ميں امام خميني (ره) کي فرمائشات کي جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا : لبنان کي اسلامي مزاحمت نے دنيا کے تمام محاسبات کو الٹ کرديا جيسا کہ حضرت امام خميني (ره) نے بارہا وبارہا امريکا کو «شيطان بزرگ» اور اسرائيل کو«فرزند آمريکا» کے نام سے ياد کيا يہ ممالک مسلمانوں کے واقعي دشمن شمار کئے جارہے ہيں ?

شيخ عبدالجليل الزاکي نے مغربي دنيا کي دوغلي پاليسي کي جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا : اج جوکچھ بھي اسلامي دنيا ميں مشاھدہ کيا جارہا ہے مغربي دنيا کي دوغلي پاليسي پر روشن وواضح دليل ہے جيسا کہ ھم ليبيا ، يمن ، بحرين اورفلسطين کے عوامي قيام کے ساتھ غرب نے دوغلي پاليسي ديکھ رہے ہيں اور يہ اس بات کا ثبوت ہے کہ امريکا نے اسرائيل کي حفاظت کے لئے بنيادي اسٹراٹيجيک تدوين کررکھي ہے ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬