30 May 2011 - 15:58
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2837
فونت
الوفاق تنظيم بحرين کے جنرل سيکريٹري :
رسا نيوز ايجنسي ـ الوفاق تنظيم بحرين کے جنرل سيکريٹري نے تاکيد کي کہ ا?ل سعود حکومت کي طرف سے تشدد ا?ميز پاليسيوں کے زير تحت کبھي بھي مستحکم و پر امن نظام قائم نہي ہو سکتا ?
حجت الاسلام شيخ علي سلمان

رسا نيوز ايجنسي کي رپورٹ کے مطابق قفول کے خطيب جمعہ اور الوفاق تنظيم بحرين کے جنرل سيکريٹري حجت الاسلام شيخ «علي سلمان» نے گذشتہ روز فرانس کے نيوز ايجنسي سے ہوئے گفت و گو ميں ا?ل سعود حکومت کي طرف سے تشدد ا?ميز پاليسيوں کي طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا : بحرين ملک ميں حکومت کي طرف سے تشدد کي پاليسيوں سے کبھي بھي اس ملک ميں امن و استحکام ممکن نہي ہے ?

انہوں نے و ضاحت کي : شديد سيکورٹي کا قيام بغير سياسي اصلاحات کے مفيد نہي ہے موجودہ ملک ميں جو حالات پيش ا? رہے ہيں ان کي بنا پر اور بھي وضعيت خراب ہوتے جا رہے ہيں اور اگر حکام اسي طرح عوام کے قتل عام کو جاري رکھے نگے اور پر امن طريقہ کا استعمال نہي کرينگے تو ملک ميں کبھي بھي استحکام و امن واپس نہي ا? سکتا ?

حجت الاسلام علي سلمان نے اس تاکيد کے ساتھ کہ عوام نظام ميں اصلاحات چاہتي ہے وضاحت کي : بحرين کے باشندہ مسلسل نظام ميں اصلاحات کي ا?وازيں بلند کر رہے ہيں اور حکومت کي نابودي کے نعرہ سے ان کا پرھيز علامت ہے کہ وہ سياسي نظام کے اصلاح چاہتے ہيں اور معاشرے کي موجودہ حالت کو بہتر بنانے کے خواہشمند ہيں ?

الوفاق تنظيم کے جنرل سکريٹري نے حکومت سے شہريوں کي طرف سے ا?ئيندہ کي شکايت کي طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا : بحرين کي حکومت جان لے کہ بحرين کي عوام نے گذشتہ دو مہينہ ميں جس حالات کا مشاھدہ کيا ہے وہ کبھي فراموش نہي کريگي اور ان تمام جرائم و ظلم کو مدلل کر کے قانوني تنطيموں کے سامنے پيش کريگي ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬