11 February 2012 - 20:23
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 3784
فونت
مصر کے مفکر اسلامي وحدت کانفرنس ميں :
رسا نيوز ايجنسي ـ مصر کے مشہور مفکر نے اس اشارہ کے ساتھ کہ سامراجيت کي کوشش ہے کہ مسلمانوں کے درميان اختلاف ڈاليں، ان کي اس کوشش کا اصل مقصد مسلمانوں کي پہچان کو ختم کرنا اور اسلام کي نابودي و مسلمانوں کي دولت و ثروت پر تسلط جانا ہے ?
سامراجيت کا اصل مقصد اسلام کي نابودي اور مسلمانوں کي دولت و ثروت پر تسلط ہے

رسا نيوز ايجنسي کي رپورٹ کے مطابق قاھرہ ميں عربي مطالعات و تحقيقي سينٹر اور عالمي مذاھب اسلامي تقريب کونسل کے صدر توفيق علي وهبہ نے گذشتہ روز اسلامي وحدت کي اھميت کي تاکيد کے ساتھ کہا : جديد و قديم سامراجيت اسلامي قوم کے درميان اختلاف ڈالنے کي کوشش ميں تھي اور ابھي ہے اور وہ چاہيتے ہيں کہ اسلامي ممالک کے درميان اختلاف برقرار رہنے اور ايجاد کرنے سے ان ہر تسلط قائم کرنے ميں ا?ساني ہوگي?

انہوں نے اس اشارہ کے ساتھ کہ جديد سامراجيت جس کي نمائندگي امريکا کر رہا ہے اس کي کوشش علاقہ کي حکومتوں پر اپني سياسي ، اقتصادي و فوجي تسلط قائم کرنا ہے وضاحت کي : اسلامي ممالک کي طاقت ان کے درميان ا?پسي اتحاد ميں ہے اور امريکا تفرقہ کي ثقافت کو فروغ دے کر اس کوشش ميں ہے کہ يہ ممالک ا?پس ميں جدا رہيں اور کبھي متحد نہ ہوں سکے?

انہوں نے گذشتہ اور عصر حاضر کي سامراجي دنيا کو اسلام کي نابودي اور مسلمانوں کي دولت و ثروت پر قبضہ کرنا جانا ہے اور ان کي طرف سے ھر طرح کي کوشش جاري ہے تا کہ مسلمانوں کے درميان اتحاد قائم نہ ہو سکے سات ساتھ وہ لوگ مسلمانوں کے درميان نفرت و مذھبي فتنہ اور کينہ پروري کي ذھنيت کو فروغ دے رہے ہيں تا کہ مسلمان اسي ميں الجھے رہيں?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬