28 February 2012 - 17:09
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 3857
فونت
لبنان کے ايک سني عالم نے رسا سے گفتگو ميں :
رسا نيوزايجنسي - تحريک عمل لبنان کے سربراہ نے بيان کيا : امام خميني (رہ) کي افکار و کردار اج آيت الله خامنه اي ميں جلوہ گر ہے اور امام خميني (رہ) سے کي ہوئي بيعت کي بنياد پر آيت الله خامنه اي کے ساتھ رہيں گے ?
شيخ زهير الجعيد

لبنان کے ايک سني عالم دين اور تحريک عمل لبنان کے سربراہ ، شيخ زهير الجعيد نے رسا نيوزايجنسي کے رپورٹر سے گفتگو ميں حضرت آيت الله خامنه اي کو امام خميني (رہ) کا نائب بيان کيا اور کہا : ھم حضرت آيت الله خامنه اي کو امام خميني (ره) کا قريبي اور اپ کا شاگرد جانتے ہيں اور اطمينان کے ساتھ يہ بات کہي جاسکتي ہے کہ آيت الله خامنه اي ہي امام خميني (ره) ہيں ?

انہوں نے مزيد کہا : آيت الله خامنه اي اور امام خميني (ره) ميں کوئي فرق نہي ہے ، آيت الله خامنه اي اج امام خميني (ره) کے افکار اور طور طريقے کا مظھر ہيں ? ھم امام خميني سے کي ہوئي بيعت کي بنياد پر آيت الله خامنه اي کے ساتھ رہيں گے ?

شيخ زهير الجعيد نے اسلامي جمھوريہ ايران کے خلاف عالمي ميڈيا کي سرگرميوں کي جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا : اسلامي جمھوريہ ايران کے خلاف ميڈيا کے پروپگنڈے کے باوجود يہ بات واضح ہے کہ عراق اور افغانستان ميں امريکا اور ايران کا مشترکہ مفاد موجود ہے اور امام خامنه اي صاف صاف اعلان کرچکے ہيں کہ وہ غاصب صھيونيت سے لڑنا چاھتے ہيں ?

اس سني عالم دين نے مزيد کہا : رھبر معظم انقلاب اسلامي اور غاصب صھيونيت کے اختلاف کے سلسلے ميں گفتگو کا مقام نہي ہے يہ بات سبھي پر واضح ہے کہ اپ اور صھيونيت امنے سامنے ہيں ? صھيونيت کے مقابل لبنان کي 33 روزہ جنگ ميں بھي آيت الله خامنه اي کا کردار کاملا روشن ہے اور حزب اللہ لبنان کے جنرل سکريٹري سيد حسن نصرالله نے بھي صاف صاف کہديا کہ حزب اللہ لبنان کے تمام اسلحے ايران فراھم کرتا ہے ?

انہوں نے مزيد کہا : سيد حسن نصرالله نے مزيد کہا تھا کہ لبنان اور فلسطين کي استقامتي تحريکوں کو ايران کي حمايت حاصل ہے اور ايران اور اسرائيل کو ايک دوسرے کے امنے سامنے کہنے کي کچھ ضرورت نہي ہے ?

شيخ زهير الجعيد نے دنيا کي استقامتي تحريکوں سے ايران کي حمايت کو عالمي سامراجيت سے دشمني کا سبب بيان کيا اور تاکيد کي : ايران اور ملت ايران لبنان اور فلسطين کي استقامتي تحريکوں سے حمايت کي بنياد پر مغربي ممالک اور ان کے حاميوں کے اقتصادي محاصرے ميں ہيں مگر ايراني اپنے علم وايمان کي طاقت پر ترقي کي راہ پر گامزن رہيں گے جو عالم اسلام کے فخر وغرور کا مقام ہے ?

تحريک عمل کے سربراہ نے صھيونيت کے مٹ جانے کي تاکيد کرتے ہوئے کہا : حضرت آيت الله خامنه اي بھي امام خميني (ره) کے شاگرد خاص ہيں اور اپ نے ابتداء انقلاب ہي سے اس غاصب صھيونيت کا مقابلہ کيا ہے اور اسي بنايد پر اس کي نابودي کے درپہ ہيں ?

انہوں نے مزيد ياد دہاني کي : جب دنيا نے فلسطينيوں کا ساتھ چھوڑ ديا تھا تو اس وقت اسلامي جمھوريہ ايران نے فلسطينيوں کا ساتھ ديا اور انہيں اپني پناہ اور اغوش ميں ليا ، ھنيہ کا استقبال کيا تاکہ ان سے کہ سکيں کہ تھران فتح واستقامت کا دارالحکومت ہے اور امام خميني (رہ) کے شاگرد ، آيت الله خامنه اي کے پروردہ مشتاق ہيں کہ فلسطين جاکر فلسطينيوں کو دشمن کے پنجے سے ازاد کراليں ?

شيخ زهير الجعيد نے اخر ميں اميد ظاھر کي کہ صھيونيت کي اخري گھڑي جلد از جلد اپہونچے تاکہ ملت فلسطين ، با ايمان وباعزت مجاھدين اپني سرزمين اور گھروں ميں واپس لوٹ ائيں ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬