06 June 2012 - 19:20
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 4196
فونت
حجت الاسلام سيد ساجد علي نقوي :
رسا نيوزايجنسي - حجت الاسلام سيد ساجد علي نقوي نے حضرت زينب (س) کي سيرت وکردارکو خواتين عالم کے لئے نمونہ عمل بتايا ?
حجت الاسلام سيد ساجد علي نقوي

رسا نيوزايجنسي کي روپورٹ کے مطابق ، قائد ملت جعفريہ پاکستان حجت الاسلام سيد ساجد علي نقوي نے پيغمبر اکرم کي نواسي ، اميرالمومنين حضرت علي اور جناب سيدہ فاطمہ زہرا سلام اللہ عليھم کي دختر جناب سيدہ زينب (س) کے روز شہادت کي مناسبت سے دئے اپنے پيغام ميں ان کي سيرت وکردار کو خواتين کے لئے نمونہ عمل بتايا ?
اس پيغام ميں ايا ہے :

پيغمبر گرامي کي نواسي اور دختر امير المومنين حضرت علي ابن ابي طالب جناب سيدہ زينب (س) کا فيصلہ کن کردارتاريخ کا ايک روشن اور درخشندہ باب ہے توحيد شناس عظيم باپ کي توحيد شناس عظيم دخترکے تمام کٹھن مراحل اور مصائب و مشکلات کے باوجود ان کے صبر و حوصلے اور جرات و شجاعت کي بدولت پيغام کربلا آج بھي اپني تمام تر اثر انگيزيوں کے ساتھ زندہ و جاويد ہے اور حريت و آزادي پر مبني تحريکيں آج بھي اس سے رہنمائي حاصل کئے ہوئے ہيں?

انہوں نے کہا : بي بي حضرت زينب (س) اپني والدہ گرامي جناب سيدہ فاطمتہ الزہرا (س) کي سيرت و کردار کا عملي نمونہ تھيں انہوں نے دين اسلام کي ترويج و اشاعت کے لئے اور خواتين عالم کي رہبري کے لئے لازوال جدوجہد کي جس سے رہنمائي حاصل کر کے دور حاضر کي خواتين اپني زندگيوں کو اسلام کے سانچے ميں ڈھال سکتي ہيں?

حجت الاسلام ساجد نقوي نے يہ کہتے ہوئے کہ واقعہ کربلا کے بعد سيدہ زينب (س) نے کوفہ وشام ميں جس جرات وبيباکي سے حق وصداقت کا پيغام پہنچايا اور فصاحت و بلاغت سے مزين خطبے ارشاد فرمائے يہ انہي خطبات کا اثر ہے کہ حسينيت کے مقابلے ميں يزيديت ہميشہ ہميشہ کے لئے ابدي شکست سے دوچار ہوچکي ہے کہا : يزديت اپني تمام تر ريشہ دوانيوں کے باوجود ناکام و نامراد ہے ? درحقيقت انہوں نے دين حق کي تبليغ کرتے ہوئے معلمہ کے طو رپر لازوال اور ناقابل فراموش کردار ادا کيا ?

انہوں نے عالم اسلام کي خواتين پر زور ديا کہ وہ اپني فلاح اور نجات کو مغربي معاشروں ميں ڈھونڈنے کي بجائے جناب سيدہ زينب (س) کے اسوہ حسنہ کو اپني زندگيوں کا شعار بنائيں کيونکہ صرف اسي صورت ميں ہي دنيوي اور اخروي نجات کا سامان فراہم ہو سکتا ہيں ?


تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬