22 October 2012 - 19:51
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 4706
فونت
ايم ڈبليوايم کا لاہور ہائي کورٹ کے باہر احتجاج ميں؛
رسا نيوزايجنسي - مجلس وحدت مسلمين نے لاہور ہائي کورٹ کے باہر احتجاج ميں مولانا غلام رضا کي رہائي کا مطالبہ کيا ?
احتجاج

رسا نيوزايجنسي کي رپورٹ کے مطابق، مجلس وحدت مسلمين، عزاداري کونسل پاکستان اور شيعہ شہريوں نے گذشتہ روز لاہور ہائي کورٹ کے باہر مولانا غلام رضا کي رہائي اور سيد شاکر علي رضوي کے قاتلوں کي گرفتاري کا مطالبہ کيا ?

ايم ڈبليوايم کے اراکين نے بے جرم گزشتہ 16 سال سے مولانا غلام رضا کو قيد وبند کي صعوبتوں کے برداشت کرنے کي جانب اشارہ کرتے ہوئے پنجاب حکومت اور عدليہ سے خطاب ميں کہا: غلام رضا نقوي کي جانب سے 6 سال قبل درخواست ضمانت دائر کي گئي ليکن اج تک اس کي سماعت نہيں ہوئي ?

انہوں نے يہ کہتے ہوئے کہ آئندہ تاريخ پر غلام رضا کي ضمانت منظور نہ کئے جانے کي صورت ميں محرم کے جلوسوں کا رخ ہائي کورٹ کي جانب ہوگا کہا: بلوچستان اور کراچي کي دہشت گردي، پنجاب کے وزير قانون رانا ثناء اللہ کي سرپرستي ميں پنجاب ميں ڈيرا ڈال چکي ہے ?

انہوں نے يہ بيان کرتے ہوئے کہ پنجاب حکومت سيٹ ايڈجسٹمنٹ کے نام پر دہشت گردوں سے اتحاد کر رہي ہے اور دہشت گردي کو فروغ دينے والوں کو مراعات دے رہي ہے تاکيد کي: ھماري مصلحت پسندي کو بزدلي کا نام نہ ديا جائے کيوں کہ اب پيمانہ صبرعنقريب لبريز ہونا چاھتا ہے ?

اراکين نے شيعہ وکيل سيد شاکر علي رضوي کے قتل کو انصاف کا قتل بتاتے ہوئے کہا: جس ملک ميں قانون کے پاسباں، وکلا محفوظ نہيں اس ملک ميں عام آدمي کا کيا حال ہوگا ?
قابل ذکر ہے کہ اس احتجاج ميں مولانا غلام رضا نقوي کي اہليہ، بيٹياں بھي شريک ہوئيں?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬