15 January 2011 - 13:56
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2296
فونت
آيت الله جوادي آملي:
رسا نيوز ايجني ـ حضرت آيت ‌الله جوادي آملي نے شهدا و علماء کو ان لوگوں ميں سے جانا ہے کہ وہ زندہ صورت ميں وارد ميدان برزخ ہونگے وضاحت کي : فشار قبر شهدا و علماء کو نہي ہوا کرتي اس لئے کہ يہ لوگ اپنے برزخي بدن کو اس قدر قوي کر ليتے ہيں کہ موت کي سختي ان پر کوئي اثر نہي ڈالتي ?
آيت الله جوادي آملي

رسا نيوز ايجنسي کے رپورٹر کے رپورٹ کے مطابق حضرت آيت الله عبدالله جوادي آملي اپنے اخلاق کے درس ميں اسلامي جمہوريہ ايران کے صوبہ گيلان کے استاد و دانشجو اور حوزہ علميہ قم کے طلاب و افاضيل کے درميان اظہار کيا : اخلاق اعتباري فن نہي ہے ، بلکہ کئي حقيقي بخش کو شامل کے ہوئے ہے ?

انہوں نے طب روحاني، معماري و مهندسي و هنر ملکوتي کو اخلاق کے فنوں ميں سے جانا ہے اور تاکيد کي : ھم لوگوں کو مرنے کے بعد زندہ ہونا ہے ليکن بعض لوگ موت کي حالات ميں ہي برزخ ميں وارد ہونگے ?

حوزہ علميہ قم کے نمايہ و مشہور استاد نے شهدا و علماء کوان لوگوں ميں سے جانا ہے کہ جو وہ زندہ صورت ميں وارد ميدان برزخ ہونگے وضاحت کي : فشار قبر شهدا و علماء کو نہي ہوا کرتي اس لئے کہ يہ لوگ اپني برزخي بدن کو اس قدر قوي کر ليتے ہيں کہ موت کي سختي ان پر کوئي اثر نہي ڈالتي ?

انہوں نے کہا : يہ لوگ جانتے ہيں کہ دنيا سے برزخ ميں کيسے جانا ہے اور تمام ان کے علوم و اعمال ان کي ذھن ميں باقي رہيگا ?

حضرت آيت الله جوادي آملي نے تاکيد کي کہ مومن و با اخلاق انسان برزخ کے ميدان ميں اچھے چہرے کے ساتھ وارد ہونگے وضاحت کي : انسان اپنے اس خوبصورت چہرہ کو دنيا ميں ہي اپنے اعمال و رفتار سے بناتا ہے ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬