27 January 2011 - 13:38
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 2334
فونت
ھندوستان ميں ؛
رسا نيوز ايجنسي ـ جامع? الزھرا لکھنؤ کے سربراہ و باني کا دل کے دورہ کي بنا پر انتقال ہوگيا ?
حجت الاسلام سيد حيدر مهدي زيدي

رسا نيوز ايجنسي کے رپورٹ کے مطابق اولين جامع? الزھرا لکھنؤ ھندوستان کے باني و سربراہ حجت الاسلام سيد حيدر مهدي زيدي کا دل کا دورہ پڑنے کي بنا پر انتقال ہو گيا ?

اس گزارش کے مطابق حجت الاسلام زيدي کو دل کي علالت کي بنياد پر اسپتال ميں بھرتي کياگيا جہاں  ڈاکٹروں کي تقريبا دو گھنٹہ مسلسلہ محنت سے افاقہ نہ ہوسکا اور دل کي حرکت بند ہو جانے کي وجہ يے تقريبا ?? سال کي عمر ميں اس فاني دنيا کو الوداع کہ ديا ?

حجت الاسلام سيد حيدر مهدي زيدي کي ولادت مظفر نگر اترپرديش ميں ہوئي انہوں نے ابتدائي تعليم اپنے وطن ميں حاصل کي اس کے بعد انہوں نے کچھ عرصہ مدرسہ منصبيہ ميں ديني تعليم و تربيت کے حصول ميں مشغول رہے اور پھر جامعہ ناظميہ لکھنؤ اسي مقصد کے حصول کے لئے تشريف لائے  اور انہوں نےمزيد اعلي تعليم کے حصول کے لئے حوزہ علميہ قم ايران کا سفر کيا اور اس حوزہ علميہ ميں درس خارج تک تعليم حاصل کرکے ھندوستان لوٹ گئے ?

انہوں نے ھندوستان پہونچ کر وہاں کے مختلف ديني ادارہ ميں تدريس کے ساتھ ساتھ خواتين کي تعليم و تربيت کے ايک مرکز کے قيام کي بنياد ڈالي اور اس سلسلے ميں انہيں ???? ميں  جامع? الزھرا کي شکل ميں کاميابي حاصل ہوئي اور جامع? الزھرا کے نام سے ايک حوزہ علميہ خواھران کا اغاز کيا ?

قابل ذکر ہے کہ جامعہ الزھراء ھندوستان ميں خواتين کا سب سے پہلا ديني تعليم کا مرکز ہے اس وقت اس ميں  ??? طالبات تعليم حاصل کر رہي ہيں اس کي پرنسپل ان کي شريک حيات رباب زيدي جن کا شمار سر زمين قم کي فاضلہ طالبات ميں سے کيا جاتا ہے ہيں ?  
 
واضح رہے کہ اس حوزہ کي سيکڑوں طالبات دنيا کے مختلف گوشے خاص کر ھندوستان ميں معارف اھل بيت عليہ السلام کو نشر کرنے ميں مشغول ہيں ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬