06 January 2013 - 14:42
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 4970
فونت
خطيب جمعه نجف :
رسا نيوز ايجنسي ـ نجف اشرف کے خطيب جمعہ نے عراق ميں مذہبي فتنہ پھيلنے کے سلسلہ ميں تمام اسلامي ممالک کو متنبہ کيا اور تاکيد کي کہ شيعہ اور سني کے درميان اختلاف بيروني ممالک کي طرف سے ادارہ ہو رہا ہے ?
حجت الاسلام سيد صدرالدين قبانچي

رسا نيوز ايجنسي کي رپورٹ کے مطابق نجف اشرف کے خطيب جمعہ حجت الاسلام سيد صدرالدين قبانچي نے اس ھفتہ حسينيہ فاطميہ کبري ميں منعقدہ نماز جمعہ کے خطبہ ميں شيعوں کي ثقافت ميں روز بہ روز توسيع کي طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا : اس وقت دنيا والوں نے اسلام کي طرف رجحان پيدا کي ہے اور اس تبديلي کے محور کو علاقہ ميں ديکھا جا سکتا ہے ? اس وقت مزيد پوري دنيا ميں اسلامي ثقافت کي توسيع کا مشاھدہ کيا جا رہا ہے ?

انہوں نے وضاحت کي : مغربي ممالک شدت سے اس ثقافت کي توسيع کا مقابلہ کر رہي ہے اور ان لوگوں کا يہ ارادہ ہے کہ اسلام و تشيع کي رجحانات کو اپنے اختيار ميں کر ليں اور مذہبي فتنہ کے ذريعہ اس رجحان کو منحرف کريں ?

حجت الاسلام قبانچي نے وضاحت کي : شيعہ اور سني کے درميان تنازعہ بيروني ممالک کي طرف سے ادارہ ہو رہي ہيں تا کہ ان کے نوکر بادشاہ اسي طرح بر سر اقتدار باقي رہيں اور اس تنازعہ و اختلاف کو جاري رکھيں ?

خطيب جمعه نجف نے عراق کي حاليہ حکومت سے تجربہ حاصل کرنے کي ضرورت کي تاکيد کي اور اظہار کيا : ھم لوگوں کي تاريخي ذمہ داري نئي عراق کي خفاظت کي ہے عراقي قوم مزيد اس تجربہ ميں روشن کردار پيش کي ہے ?

انہوں نے عراق کي موجودہ صورت حال پر متنبہ کرتے ہوئے تاکيد کي : بحران کا مقابلہ کرنے کے لئے عقلانيت کا استعمال کرنا ضروري ہے ، ھم سب لوگوں کي ذمہ داري ہے کہ اس تاريخي صورت حال کي حفاظت کريں اور ملک کے مستقبل کے سلسلہ ميں خاص توجہ ديں ?
تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬