27 January 2013 - 15:25
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 5046
فونت
عمار حکيم نے وحدت اسلامي کنفرانس ميں:
رسا نيوزايجنسي – مجلس اعلي اسلامي عراق کے صدر نے کہا: غزہ جنگ ميں اسرائيليوں پر فلسطينيوں کي پيروزي ان کي مزيد حمايت کي نياز مند ہے ?
سيد عمار حکيم

رسا نيوزايجنسي کي رپورٹ کے مطابق، مجلس اعلي اسلامي عراق کے صدر حجت الاسلام سيد عمار حکيم نے 26 ويں وحدت اسلامي کانفرنس ميں جو ا?ج 27 جنوري کي صبح تھران ميں منعقد ہوئي ولادت پيغمبر اسلام(ص) کي مبارکباد ديتے ہوئے کہا: ھم اسلامي جمھوريہ ايران کا امام خميني بزرگ (رہ) سے امام خامنہ اي تک اس کانفرنس کے انعقاد کے شکر گزار ہيں اور اس سلسلہ ميں آيت الله اراکي کي زحمتيں بھي قابل قدر ہيں ?

عمار حکيم نے مزيد کہا: ھميں اسلام کے نشر اور معاشرہ کي اصلاح ميں پيغمبراکرم(ص) سے متمسک ہونا چاھئے ، حضرت محمد(ص) مصلح بزرگ تھے اور حضرت نے عشق وايمان کي بنيادوں کا اس راہ ميں مظاھرہ کيا ہے ?

حجت الاسلام حکيم نے رسالت نبوي کي خصوصيتوں کي جانب اشارہ کيا اور کہا: سماجي عزت پيغمبروں کي خصوصيتوں ميں سے ہے جس راستہ پر پيغمبر اسلام(ص) بھي چلے اور ا?پ نے غار حرا ميں تن تنہا خداوند متعال کي عبادتيں کي ، مقصد رسالت کا تحقق بھي پيغمبر اسلام(ص) کي ايک دوسري خصوصيت ہے جس پر ا?پ تاکيد کرتے تھے ?

مجلس اعلي اسلامي عراق کے صدر نے مزيد کہا: رسالت الھي پر ايمان لانے کي کوشش ، اور اصلاحات ميں درجہ بندي تبليغ حضرت محمد مصطفي (ص) کي خصوصيتوں ميں سے ہے ، پيغمبر اسلام(ص) ابتداء ميں انفرادي تبليغ کيا کرتے تھے اور پھر ا?پ نے اپنے خاندان والوں پر تبليغ کا کام شروع کيا يہاں تک کہ يہ تبليغ عالمي صورت اختيار کرگئي ?

انہوں نے پيغمبراسلام(ص) کو خطرات سے روبرو ہونا ا?پ کي ديگر خصوصيتوں ميں سے شمار کرتے ہوئے کہا : پيغمبر اکرم(ص) تبليغ رسالت الهي کي راہ ميں بہت سارے الزامات سے روبرو ہوئے اور ا?پ پر سحر وجنون کا الزام لگايا گيا ، اصلاحي پروجيکٹ کي جامعيت اور انسانوں کو ايک نگاہ سے ديکھنا ا?پ کي ديگر خصوصيتيں ہيں ?

حجت الاسلام حکيم نے اصلاحات کو معنوي مسئلہ بتاتے ہوئے تاکيد کي : ھم معاشرے کي اصلاح ميں پيغمبر اسلام(ص) کے ميعاروں سے استفادہ کريں کيوں کہ دشمن کوشش ميں ہے کہ مذھبي ، مسلکي اور قبائلي بنيادوں پر ملت اسلاميہ کے درميان تفرقہ اور اختلاف ڈال سکے ?

انہوں نے مذھبي اور نسلي تنوع کو خدا کي مرضي کے مطابق جانا اور کہا: مذھبي اور نسلي تنوع، تفرقہ کا سبب نہيں ہوسکتا بلکہ معاشرہ اس اختلاف کي بنياد پر ايک دوسرے کي شناخت کا سبب ہے ، سب سے بڑا خطرہ يہ ہے کہ مذھبي اور نسلي تنوع کو اختلاف اور مذھبي جنگ کے لئے استفادہ کيا جائے ?

انہوں نے اسلامي دنيا کي نئي تبديليوں کا جائزہ ليتے ہوئے کہا: سوريہ ميں تقريبا دوسال سے خون و خونريزي کا عالم ہے ، اس ملک کي بحراني صورت اور خون و خونريزي فقط گفتگو کے سہارے ختم ہوسکتي ہے اور سوريہ ميں ثبات کي حکمراني ہوسکتي ہے ?

مجلس اعلي اسلامي عراق کے صدر نے فلسطين کو ملت اسلاميہ کے اتحاد کا مرکز بتاتے ہوئے کہا: غزہ جنگ ميں اسرائيليوں پر فلسطينيوں کي پيروزي ان کي مزيد حمايت کي ضرورت مند ہے ?

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬