03 June 2014 - 13:32
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 6845
فونت
شیعہ علماء کونسل پاکستان:
رسا نیوز ایجنسی – حجت الاسلام و المسلمین سید ساجد علی نقوی ولادت باسعادت حضرت ابوالفضل العباس(ع) کے موقع پر عالم اسلام خصوصا دنیا کے شیعوں کو مبارکباد پیش کی ۔
حرم حضرت ابوالفضل العباس(ع)

 

نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، شیعہ علماء کونسل پاکستان کے سربراہ حجت الاسلام و المسلمین سید ساجد علی نقوی نے اپنے ارسال کردہ پیغام میں یوم ولادت باسعادت حضرت ابوالفضل العباس(ع) کی عالم اسلام خصوصا دنیا کے شیعوں کو مبارکباد پیش کی ۔


اس پیغام کا تفصیلی متن یہ ہے :


خاندان رسالت کے ہر فرد کا اسوہ رہتی دنیا تک نہ صرف عالم اسلام بلکہ عالم انسانیت کی رشد و ہدایت کا سامان فراہم کرتا رہے گا کیونکہ خانوادہ عصمت و طہارت نے دین اسلام اور عالم انسانیت کے تحفظ ، استحکام اور بقاء کے لئے نامساعد حالات اور کٹھن مراحل کی پرواہ کئے بغیر ہر دور میں اپنی سیرت اور عمل و کردار کے ذریعہ ایسے انمٹ نقوش چھوڑے جو آج بھی سسکتی اور بھٹکتی ہوئی انسانیت کی نجات کا سامان فراہم کررہے ہیں ۔


حضرت امیر المومنین علی ابن طالب علیھما السلام کے فرزند حضرت ابوالفضل العباس علیہ السلام دنیا میں وفا شعاری اور جانثاری کا اعلی نمونہ تھے ۔ جس طرح امیر المومنین علی ابن ابی طالب علیھما السلام نے پیغمبر گرامی صلی اللہ علیہ و الہ وسلم کے ساتھ وفاشعاری کی داستانیں رقم کیں اسی طرح حضرت عباس نے علیہ السلام نواسہ پیغمبر صلی اللہ علیہ و الہ وسلم کے ساتھ وفا اور محبت کے تمام تقاضے پورے کئے۔


ان کی شخصیت جبر و آمریت اور ظلم و بربریت کے خلاف قیام کا استعارہ ہے اور حق پرستوں اور وفا شعاروں کے لئے رہنمائی کا ذریعہ اور روشنی کا مینار ہے۔ 


واقعہ کربلا میں لشکر حسینی کے سپہ سالار کی حیثیت سے جرات و بہادری اور دلیری و وفاشعاری کی جو لازوال داستان حضرت عباس علیہ السلام نے رقم کی وہ درحقیقت ان کے والد گرامی امیر المومنین علی ابن ابی طالب علیھما السلام کی پاکیزہ اور بے مثال تربیت کا عظیم نمونہ تھی ۔


حضرت عباس علیہ السلام نے اپنے والد گرامی کی سرپرستی میں کفار و مشرقین اور منافقین کے خلاف ہر محاذ پر صف اول میں مجاہدانہ کردار ادا کیا اور شجاعت و بہادری کے ساتھ ساتھ علم و حکمت کے بھی جوہر دکھائے جن پر عمل پیرا ہوکر آج بھی اپنی انفرادی واجتماعی زندگیوں کو سنواراجاسکتا ہے ۔


امت مسلمہ اگر حضرت عباس علیہ السلام کے اسوہ  اور دلیری و وفاشعاری کو اپنائے اور خواتین عالم کردار زینبی پر عمل پیرا ہوں تو ظلم و جبر اور بدی کا پرچار کرنے والی قوتوں کی سازشوں کو ناکام بنایا جاسکتا ہے ۔       
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬