26 August 2014 - 11:58
‫نیوز‬ ‫کوڈ‬: 7187
فونت
ڈاکٹر طاہر القادری :
رسا نیوز ایجنسی ـ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ نے بیان کیا : تاریخ کے اتنے بڑے ہجوم نے بڑے صبر و تحمل اور برداشت کا عظیم مظاہرہ کیا۔
ڈاکٹر طاہر القادري


رسا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اسلام آباد میں انقلاب مارچ کے شرکاء سے خطاب میں پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے بیان کیا : تاریخ کے اتنے بڑے ہجوم نے بڑے صبر و تحمل اور برداشت کا عظیم مظاہرہ کیا۔

انہوں نے تاکید کی : انقلاب مارچ اپنے آخری مرحلے میں داخل ہوچکا ہے۔ میں نے شہادت کی نیت سے غسل کرکے اپنے لئے کفن خرید لیا ہے۔ میں یہ کفن پہنوں گا یا پھر وزیراعظم نواز شریف کا اقتدار پہنے گا۔ اگر حکمرانوں کا اقتدار بچا تو یہاں شہداء کا قبرستان بنے گا۔

طاہر القادری نے کہا : اب غیر یقینی صورتحال نہیں رہی، میں آج حکمرانوں کو 48 گھنٹوں کا الٹی میٹم دے رہا ہوں۔ دو دن میں اسمبلیاں توڑ دو اور حکومتیں ختم کر دو، وزیراعظم اور وزیراعلٰی استعفٰی دیں ورنہ دما دم مست قلندر ہوگا۔

انہوں نے وضاحت کی : الیکشن کمیشن کے سابق نمائندے محمد افضل خان نے 2013ء کے انتخابات میں دھاندلی کا انکشاف کرکے حکمرانوں کا بھانڈا پھوڑ دیا ہے۔ الیکشن کمیشن جس نے انتخابات کروائے وہ خود غیر آئینی تھے۔ الیکشن کمیشن کو بنانے کی شرط پورا کئے بغیر سیاسی مک مکا کیا گیا۔ سارا الیکشن کمیشن آئین کے آرٹیکل 213 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے تشکیل دیا گیا۔

طاہر القادری نے تاکید کی : اے این پی اور پیپلز پارٹی کے رہنمائوں نے تسلیم کیا کہ الیکشن کمیشن آرٹیکل 213 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بنایا گیا۔ جب الیکشن کمیشن غیر آئینی تھا تو اس کے تحت بننے والی اسمبلیاں، حکومتیں، وزیراعظم، وزرائے اعلٰی سب جعلی اور غیر آئینی ہیں۔

انہوں نے کہا : سانحہ ماڈل ٹائون پر جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ کو مکمل ہوئے 17 روز گزر گئے لیکن اسے اب تک جاری نہیں کیا جا رہا۔ سانحہ ماڈل ٹائون کی رپورٹ میری ڈیڈ لائن سے پہلے جاری کی جائے۔ الٹی میٹم سے پہلے 2 آزاد ارکان کے اختلافی نوٹ کو بھی دکھایا جائے۔
 

تبصرہ بھیجیں
نام:
ایمیل:
* ‫نظریہ‬:
‫برای‬ مہربانی اپنے تبصرے میں اردو میں لکھیں.
‫‫قوانین‬ ‫ملک‬ ‫و‬ ‫مذھب‬ ‫کے‬ ‫خالف‬ ‫اور‬ ‫قوم‬ ‫و‬ ‫اشخاص‬ ‫کی‬ ‫توہین‬ ‫پر‬ ‫مشتمل‬ ‫تبصرے‬ ‫نشر‬ ‫نہیں‬ ‫ہوں‬ ‫گے‬